پاکستان : پاڑہ چنار میں خواتین کی امام بارگاہ کے نزدیک بم دھماکہ ، 24 ہلاک ، 90 زخمی

Mar 31, 2017 01:50 PM IST | Updated on: Mar 31, 2017 06:30 PM IST

پارہ چنار :ـ پاکستان شمال مغربی شہر پارہ چنار کے ایک معروف بازار میں امام بارگاہ کے باہر ہوئے بم دھماکہ میں کم از کم 24 افراد ہلاک اور 90 دیگر زخمی ہوگئے ہیں۔ افغان سرحد سے متصل علاقہ میں ہوئے اس دھماکہ کی فی الحال کسی نے ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ یہ امام بارگاہ میں خواتین کے داخل ہونے کے دروازے کے نزدیک ہوا جہاں بازار میں کافی لوگ جمع تھے۔

اس سال یہاں کئی سلسلہ وار دھماکے ہوچکے ہیں۔ مقامی سیاسی ایجنٹ اکرام اللہ خان نے بتایا ہے کہ مرنے والوں کی تعداد 24 ہوچکی ہے اور 90 زخمی ہیں۔ پارہ چنار کے ممبر پارلیمنٹ ساجد حسین نے کہا کہ دھماکہ سے قبل فائرنگ ہوئی۔ انہوں نے اسے خودکش بم دھماکہ بتایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ حملہ بھیڑ بھاڑ والے بازار میں ہوا ہے، اس میں غالبا امام بارگاہ کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

پاکستان : پاڑہ چنار میں خواتین کی امام بارگاہ کے نزدیک بم دھماکہ ، 24 ہلاک ، 90 زخمی

photo : expressnews

واضح رہے کہ پارا چنار پاک افغان سرحد پر قبائلی علاقے کرم ایجنسی کا انتظامی ہیڈ کوارٹر ہے، یہ زیادہ آبادی والا علاقہ نہیں ہے، اس علاقے کی آبادی 40 ہزار کے قریب ہے جس میں مختلف قبائل، نسل اور عقائد کے لوگ شامل ہیں، یہ علاقہ 1895 میں انگریزوں نے تعمیر کیا تھا۔ 2007ء میں اس علاقے ہونے والی فرقہ ورانہ جھڑپوں کے بعد فوج اور نیم فوجی دستوں نے یہاں کی شاہراہوں پر چوکیاں قائم کی تھیں۔ اگرچہ یہاں فوج اور مقامی قبائلی رضا کاروں پر مشتمل چوکیاں قائم ہیں لیکن کرم ایجنسی اور اورکزئی ایجنسی میں دشوار گزار پہاڑی راستے ہیں جہاں سے عسکریت پسند دوسرے علاقوں میں داخل ہونے کی کوشش کرتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز