مصر میں ہم جنس پرستی کے الزام میں گرفتار 17 افراد رہا

Nov 27, 2017 07:52 PM IST | Updated on: Nov 27, 2017 07:52 PM IST

قاہرہ۔ مصر میں قاہرہ کی ایک عدالت نے گزشتہ ماہ ہم جنس پرستی کے خلاف چلائی گئی مہم کے تحت حکام کی طرف سے گرفتار 17 لوگوں کی رہائی کا حکم دیا ہے۔ عدالتی ذرائع نے آج بتایا کہ یہ حکم کل سنایا گیا۔ اس سے پہلے نچلی عدالت نے ان تمام لوگوں پر ہم جنس پرست کارروائیوں میں ملوث ہونے اور زیادتی پر اکسانے کا الزام لگاتے ہوئے ان پر پانچ ہزار مصری پاؤنڈ (285 امریکی ڈالر) جرمانے کی سزا اوراسے ادا نہیں کرنے پر تین سال تک کے لئے جیل کی سزا سنائی تھی۔ اس کے بعد ملزمان نے اس حکم کو اعلی عدالت میں چیلنج کیا جہاں سے انہیں راحت ملی۔

اگرچہ ہم جنس پرستی کو مصر میں غیر قانونی قرار دیا گیا ہے لیکن یہاں کا معاشرہ قدامت پسند ہے اور تعصب بڑے پیمانہ پر ہے۔ اکثر ہم جنس پرست مردوں کو گرفتار کیا جاتا ہے اور ان پر عام طور پر زیادتی، بدکردار یا توہین کا الزام لگایا جاتا ہے۔ مصر کی سیکورٹی فورسز نے ایک مہم چلا کر 57 افراد کو گرفتار کیا تھا۔

مصر میں ہم جنس پرستی کے الزام میں گرفتار 17 افراد رہا

علامتی تصویر

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز