شام میں بسوں کے قافلے پر حملہ ،126افراد کی موت

Apr 16, 2017 09:40 PM IST | Updated on: Apr 16, 2017 09:41 PM IST

بیروت: شام کے حلب شہر کے بیرونی علاقے میں بسوں سے باہر نکالے جارہے لوگوں کے قافلے پر ہوئے خودکش بم حملے میں 126افراد مارے گئے ہیں۔ شام میں انسانی حقوق کی نگرا نی کرنے والے برطانوی گروپ ’سیرین آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے آج یہ اطلاع دی۔ شام میں بچاؤ اور راحت کارکنان نے بتایا کہ انہوں نے جائے وقوع سے اب تک کم از کم 100لاشیں نکالی ہیں۔ برطانوی انسانی حقوق گروپ کے مطابق باغیوں کے قبضے والے علاقوں سے شیعہ لوگوں کو ایک سمجھوتے کے تحت کل بسوں سے باہر نکالا جارہا تھا۔اسی وقت وہاں بم دھماکہ ہوگیا جس میں کم از کم 126 لوگ مارے گئے اور بڑی تعداد میں لوگ زخمی ہوگئے ہیں۔تنظیم نے مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ کا اندیشہ ظاہر کیا ہے۔

کسی بھی شخص یا گروپ نے اس حملہ کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ سرکار ی حمایت یافتہ میڈیا نے بتایا کہ خودکش حملہ آور نے یہ حملہ کیا۔ سیریا کے اہم مسلح باغی گروپ اور مفت سیرین آرمی کے بینر تلے لڑنے والے گروپوں نے اس حملہ کو بزدلانہ دہشت گردانہ حملہ قرار دیتے ہوئے اس کی سخت مذمت کی ہے۔ گروپ کے مطابق دھماکہ حلب کے بیرونی علاقے راشدین میں ہوا۔لوگ جمعہ سے ہی اس علاقے سے جانے کا انتظار کررہے تھے۔اس قافلہ میں کم از کم پانچ ہزار لوگ شامل تھے۔واقعہ کے بعد کئی زخمیوں کو ایمبولینس سے اسپتال پہنچایا گیا۔زخمیوں میں سے کئی کی حالت نازک ہے۔

شام میں بسوں کے قافلے پر حملہ ،126افراد کی موت

خیال رہے کہ یہاں باغیوں کے قبضے والے علاقوں میں پھنسے لوگوں کو بحران سے نکالنے کیلئے چار شہروں کے تعلق سے معاہدہ ہوا تھا۔اس سے پہلے دسمبر میں پھنسے ہوئے لوگوں کو یہاں سے نکالنے کا منصوبہ ناکام ہوگیا تھا اس وقت باغیوں نے لوگوں کو لے جانے والی بسوں میں آگ لگا دی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز