فیفا ورلڈ کپ 2018 : فتح کے ساتھ مہم کا آغاز کرنے کی کوشش کرے گا میزبان روس

پچھلے چند برسوں میں ڈوپنگ کے تنازعات سے دوچار اور فیفا ورلڈ کپ میں سب سے نچلی رینکنگ والا میزبان روس ٹورنامنٹ کے افتتاحی میچ میں سعودی عرب کے خلاف فتح کے ساتھ اپنی مہم کا آغاز کرنے کے ہدف کے ساتھ اترے گا۔

Jun 13, 2018 07:08 PM IST | Updated on: Jun 13, 2018 07:21 PM IST

ماسکو: پچھلے چند برسوں میں ڈوپنگ کے تنازعات سے دوچار اور فیفا ورلڈ کپ میں سب سے نچلی رینکنگ والا میزبان روس ٹورنامنٹ کے افتتاحی میچ میں سعودی عرب کے خلاف فتح کے ساتھ اپنی مہم کا آغاز کرنے کے ہدف کے ساتھ اترے گا۔ روس اور سعودی عرب کے مقابلے سے فٹ بال عالمی کپ ٹورنامنٹ کا آغاز ہوجائے گا۔ یہ مقابلہ لوزنیکی اسٹیڈیم میں ہوگا اور دونوں ٹیموں کی نگاہیں فتح کے ساتھ آغاز کرنے پر لگی ہوں گی۔ روس او رسعودی عرب کے گروپ اے میں مصراور سابق چمپین اروگوئے جیسی ٹیمیں ہیں۔ اس مقابلے میں جو ٹیم جیتے گی اس کے لئے ناک آوٹ دور میں پہنچنے کے امکانات بڑھ جائیں گے۔

روس نے جب عالمی کپ کے انعقاد کیلئے دعویداری پیش کی تھی تب اس کی ٹیم بلندی پر تھی۔ روس نے 2008کی یوروپین چمپئن شپ کے سیمی فائنل میں جگہ بنائی تھی لیکن تب سے اب تک کافی تبدیلی ہوچکی ہے۔ روس 32 ٹیموں کے عالمی کپ میں سب سے نچلی رینکنگ کی ٹیم کی شکل میں اتررہا ہے۔ وہ 2008سے کسی بھی ٹورنامنٹ میں گروپ مرحلے سے آگے نہیں بڑھ سکا ہے جسے دیکھتے ہوئے روسی ٹیم اپنے ملک کی امیدوں کو برقرار رکھنے کے لئے شاندار آغاز کرنا چاہئے گی۔

فیفا ورلڈ کپ 2018 : فتح کے ساتھ مہم کا آغاز کرنے کی کوشش کرے گا میزبان روس

روس ٹورنامنٹ کے افتتاحی میچ میں سعودی عرب کے خلاف میدان میں اترے گا ۔ فائل فوٹو ۔ اے ایف پی۔

روس نے میزبان ہونے کے ناطے کوالیفیکیشن راونڈ میں حصہ نہیں لیا اور اسے براہ راست عالمی کپ میں جگہ مل گئی۔ لیکن اس کے بعد کے نتائج میں روس کو متوقع کامیابی حاصل نہیں ہوئی اور وہ عالمی رینکنگ میں 66ویں نمبر تک گر گیا۔ روس کی آخری فتح اکتوبر 2017میں جنوبی کوریا کے خلاف تھی اور اس کے بعد سات میچوں میں اسے کوئی کامیابی حاصل نہیں ہوئی ہے۔

دوسری طرف سعودی عرب نے عالمی کپ کے لئے اپنی تیاریوں کو سابق چمپئن اٹلی کے خلاف بین الاقوامی میچ کے بعد سے تیز کردی ہے۔ حالانکہ سعودی عرب کی ٹیم اس مقابلے میں 1-2سے ہار گئی تھی ۔ یحی الشہری نے اس میچ میں اپنی ٹیم کا واحد گول کیا تھا۔ یہ بھی دلچسپ ہے کہ اٹلی کی ٹیم اس مرتبہ عالمی کپ کے لئے کوالیفائی نہیں کرسکی ہے۔

پانچویں مرتبہ عالمی کپ کھیل رہے سعودی عرب نے ٹورنامنٹ آنے تک دو کوچوں کو برخاست کیا ہے ۔ ایڈگارڈو باوجا کوپانچ میچوں کے بعد ہی اس وقت برخاست کردیا گیا جب ڈرا نکلنے میں نو دن باقی تھے۔ سعودی عرب نے بھی مسلسل تین میچ گنوائے ہیں ۔ حالانکہ یہ شکست اسے اٹلی، پیرو اور سابق چمپئن جرمنی سے ملی ہے۔

دونوں ٹیمیں عالمی کپ میں اپنی فتح کی خشک سالی کو دور کرنے کے لئے اتریں گی۔ روس نے 2002کے بعد سے عالمی کپ میں کوئی میچ نہیں جیتا ہے جب کہ سعودی عرب کی آخری جیت 1994میں امریکہ میں ہوئے عالمی کپ میں تھی۔ روس نے عالمی کپ کی تیاریوں کے لئے نووگوسرک میں اپنے ٹھکانے میں ایک ہفتہ کی ٹریننگ نہایت پرسکون طریقے سے کی ہے۔ ماسکو میں جہاں عالمی کپ کے سلسلے میں ہلچل مچلی ہوئی تھی وہیں روسی ٹیم سکون کے ساتھ اپنا مشق کررہی تھی۔

میزبان ٹیم کے حق میں ایک دلچسپ ریکارڈ ہے۔ عالمی کپ میں کوئی بھی میزبان ٹیم افتتاحی میچ نہیں ہاری ہے ۔ میزبان ٹیموں نے چھ جیت حاصل کی ہے اور تین میچ ڈرا رہے ہیں۔ روس نے 1970 میں سوویت یونین کے طور پر میکسیکو کے ساتھ عالمی کپ کا افتتاحی میچ گول کے بغیر ڈرا کھیلا تھا او رٹیم کو امید ہے کہ اس کی عالمی کپ میں مثبت شروعات ہوگی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز