افغان اور غیر ملکی سکیورٹی دستوں نے ہیلمند میں طالبان کی جیل سے 30 افراد کو کرایا آزاد

Nov 19, 2017 06:00 PM IST | Updated on: Nov 19, 2017 06:00 PM IST

لشکر گاہ: افغان اور غیر ملکی سکیورٹی دستوں نے جنوبی ہیلمند صوبے میں طالبان کی ایک جیل پر چھاپہ مارکر کم از کم 30افراد کو آزاد کرایا۔فوج اور صوبائی افسروں نے یہا اطلاع دی ہے۔حکام نے بتایا کہ صوبے کے ناوزاد ضلع میں جن لوگوں کو بچایا گیا ان میں 12سال سے کم عمر کے چار بچے اور دو پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔طالبان نے ان میں سے 20افراد کو حکومت کی مدد کرنے کے شبہ میں گرفتار کیا تھا اور ان میں سے کچھ لوگ فوج اور پولیس خاندانوں سے منسلک تھے۔

فوج کے ایک ڈپٹی ترجمان عبدالقادر بہادر زائی نے کہا کہ جن لوگوں کو بچایا گیا ہے ان میں سے چھ لوگوں کے بارے میں جانچ کی جارہی ہے کہ انہیں کس معاملے میں جیل بھیجا گیا تھا۔طالبان نے جاری ایک بیان میں کہا کہ جن لوگوں کو چھڑایاگیا ہے وہ مجرم تھے اور ان کے خلاف لوٹ ،اغوا،انفرادی معاملوں اور دیگر معاملوں میں سماعت جاری تھی۔طالبان کے ترجمان قاری یوسف احمدی نے ایک بیان جاری کرکے کہا کہ اس جیل میں دشمن کا کوئی شخص نہیں تھا اور اسی وجہ سے جیل کی سکیورٹی زیادہ سخت نہیں تھی۔

افغان اور غیر ملکی سکیورٹی دستوں نے ہیلمند میں طالبان کی جیل سے 30 افراد کو کرایا آزاد

افغان طالبان: فائل فوٹو

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز