کاتالونیا : 90 فیصد لوگوں کی اسپین سے علاحدگی کےحق میں ووٹنگ ، پرتشدد واقعات میں 844 افراد زخمی

Oct 02, 2017 01:11 PM IST | Updated on: Oct 02, 2017 01:25 PM IST

میڈرڈ: اسپین کے شمال مشرق میں واقع کاتالونیاریاست کی حکومت نے کہا ہے کہ اسپین سے الگ ہونے کے لئے کرائے گئے ریفرنڈم میں تقریبا22لاکھ 60ہزار لوگوں نے ووٹ دیئے ۔کاتالونیا کی حکومت کے مطابق 90فیصد لوگوں نے اسپین سے الگ ہونے کے حق میں ووٹ دیئے ۔ کل 53لاکھ 40ہزار ووٹروں میں سے 42اعشاریہ 3فیصد نے اس ریفرنڈم میں حصہ لیا۔

اطلاعات کے مطابق اسپین سے علیحدہ ہونے کے لئے حکومت کی پابندی کے باوجود ہونے والے ریفرنڈم کے دوران پرتشددواقعات میں 844سے زائد زخمی ہوگئے ۔ بارسلونا کے میئر ایڈا کولو نے ایک بیان جاری کرکے یہ اطلاع دی ہے ۔مسٹر کولو نے کہا ’’بارسلونا کا میئر ہونے کے ناطے میں نہتے لوگوں کے خلاف پولیس کی طرف سے دائر کئے گئے سبھی معاملے واپس لینے کا مطالبہ کرتا ہوں ۔‘‘ ریفرنڈم کے دوران ووٹ ڈالنے کی کوشش کررہے لوگوں کو روکنے کے لئے پولیس نے بیلٹ باکس اور بیلٹ پیپر ضبط کرلئے ۔اسپین کی حکومت نے اس ریفرنڈم کو غیر قانونی قراردیتے ہوئے اس پر پابندی لگادی تھی ۔

کاتالونیا : 90 فیصد لوگوں کی اسپین سے علاحدگی کےحق میں ووٹنگ ، پرتشدد واقعات میں 844 افراد زخمی

کاتالونیہ میں نہیں ہوا ریفرنڈم :ماریانوراجوئے

ادھر اسپین کےوزیر اعظم ماریانوراجوئے نے شمال مشرق میں واقع کاتالونیہ ریاست میں کسی بھی طرح کےریفرنڈم سے انکار کیا ہے ۔ مسڑراجوئے نے کہا کہ کاتالونیہ کے لوگوں کو ممنوعہ ریفرنڈم میں حصہ لینے کے اکسایا گیاتھا۔انھوں نے اس کے لئے مقامی حکومت کو ذمہ دار قراردیتے ہوئے کہا کہ یہ کچھ سازشی علیحدگی پسندوں کی جمہوری طریقہ سے قائم حکومت کے خلاف ایک سازش ہے ۔ حکومت کے پابندی کے باوجود ہوئے ریفرنڈم کے دوران ہوئے تشدد میں 844سے زائد افراد زخمی ہوگئے ۔مسٹر راجوئے نے اس دوران نظم ونسق برقرار رکھنے کے لئے سلامتی دستوں کا شکریہ بھی ادا کیا ۔اسپین کے وزیر اعظم نے اس سلسلہ میں ملک کی سبھی سیاسی پارٹیوں کے ساتھ صلاح مشورہ کرنے کی بھی بات کہی ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز