کابل میں نماز جنازہ کے دوران بم دھماکہ ، 18 افراد ہلاک

Jun 03, 2017 10:51 PM IST | Updated on: Jun 03, 2017 10:51 PM IST

کابل : حکومت مخالف مظاہرے کے دوران مارے گئے ایک افغان رہنما کے بیٹے کے جنازہ کے دوران ہوئے دھماکوں میں کم از کم 18 لوگوں کی موت ہو گئی ۔ ساتھ ہی درجنوں افراد زخمی ہوئے ۔ اس سے افغانستان کے دارالحکومت میں کشیدگی مزید بڑھ گئی ہے ۔

عینی شاہدین کے مطابق سلیم کی لاش کی تدفین کے مقام پر تین دھماکے ہوئے ۔ پولیس کو کابل میں مظاہرہ کر رہے سینکڑوں مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے گولی چلانی پڑی تھی ۔ اس دوران افغان رہنما کے بیٹے سمیت چار افراد کی موت ہو گئی تھی ۔

کابل میں نماز جنازہ کے دوران بم دھماکہ ، 18 افراد ہلاک

file photo

ایک عینی شاہد نے بتایا کہ دھماکوں سے لوگوں کے جسم کئی ٹکڑوں میں منقسم ہو گئے ۔ وزارت صحت کے ترجمان نے اے ایف پی کو بتایا کہ اب تک چھ لاشوں اور 87 زخمی لوگوں کابل کے اسپتالوں میں لایا گیا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز