پاکستان : دہشت گردی کے خلاف آپریشن کی فہرست میں ضرب عضب کے بعد اب رد فساد کا اضافہ

سی ٹی ڈی ملتان کی ٹیم نے خفیہ اطلاع پر ضلع مظفر گڑھ کے علاقے ٹی پی لنک کینال روڈ پر صبح 4 بج کر 15 منٹ پر مفرور مبینہ دہشت گرد یاسین کی گرفتاری کے لیے چھاپہ مارا تھا۔

Feb 24, 2017 08:29 PM IST | Updated on: Feb 24, 2017 08:29 PM IST

اسلام آباد : پاکستان میں دہشت گردی سے نجات کے لئے ایک سے زیادہ فوجی کارروائیوں کا سلسلہ 2014 میں ’’ضرب عضب‘‘ تک دراز کرنے اور محض ایک سال کے اندر 2763 دہشت گردوں کو ہلاک کردینے کے دعوے کے با وجود اسی ماہ 16 فروری کو درگاہ لعل شہباز قلندر کے احاطے میں 80 سے زیادہ ہلاکتوں اور 200 سے زیادہ لوگوں کے زخمی ہونے کے بعد اب آپریشن’’ رد الفساد‘‘ کے تحت پولیس کے محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) نے پنجاب کے ضلع مظفر گڑھ میں ایک مقابلے میں 6 مبینہ دہشت گردوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

روزنامہ ڈان نے سی ڈی سی کے ترجمان کے حوالے بتایا کہ مبینہ دہشت گرد 10 تھے لیکن ان کے چار ساتھی انکاونٹر کے دوران تاریکی کا فائدہ اٹھا کر بھاگنے میں کامیاب رہے۔ اخبار کے مطابق سی ٹی ڈی ملتان کی ٹیم نے خفیہ اطلاع پر ضلع مظفر گڑھ کے علاقے ٹی پی لنک کینال روڈ پر صبح 4 بج کر 15 منٹ پر مفرور مبینہ دہشت گرد یاسین کی گرفتاری کے لیے چھاپہ مارا تھا۔

پاکستان : دہشت گردی کے خلاف آپریشن کی فہرست میں ضرب عضب کے بعد اب رد فساد کا اضافہ

ہتھیار ڈال کر خود سپردگی کا اعلان کرنے کے بعد زد میں آنے والوں نے پولیس پر فائرنگ شروع کردی۔پولس نے بھی جوابی اقدام کیا جس میں چھ مبینہ دہشت گرد مارے گئے اور اندھیرے کا فائدہ اٹھاکر ان کے چارساتھی فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ ہلاک ہونے والے مبینہ دہشت گردوں کی لاشیں ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرز (ڈی ایچ کیو) اسپتال منتقل کردی گئیں، جہاں ان کا پوسٹ مارٹم کیا گیا۔

سی ٹی ڈی کی جانب سے جاری بیان کے مطابق مارے جانے والوں میں تین کے نام یاسین، عمران اور امجد ہیں۔ باقی تین کی شناخت ابھی باقی ہے۔ ترجمان سی ڈی ٹی کے مطابق ملزمان کے قبضے سے 5 ہینڈ گرنیڈ، 2 رائفل، 2 سرکاری رائفل، 3 پستولیں اور گولیاں بھی بر آمد کی گئیں۔

Loading...

خیال رہے کہ اس سے قبل 16 فروری کو بھی سی ٹی ڈی پنجاب نے ضلع خانیوال میں مقابلے کے دوران کالعدم تنظیم سے تعلق رکھنے والے چھ مبینہ دہشت گردوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔ مک میں دہشت گردی کی حالیہ لہر کے بعد پاک فوج اور سیکیورٹی اداروں نے دہشت گردوں کے خلاف ملک گیر آپریشن’رد الفساد‘ جاری کر رکھا ہے، جس کا آغاز بھی 23 فروری سے پنجاب کے شہر راولپنڈی سے کیا گیا تھا۔ اس بیچ پاک فوج، رینجرز اور پولیس نے راولپنڈی میں مشترکہ کارروائی کرتے ہوئے 13 افغان باشندوں سمیت 40 مشکوک افراد کی گرفتاری کا دعویٰ کیا گیا جبکہ ان کے قبضے سے بڑے پیمانے پر ہتھیار بھی برآمد کیا گیا۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز