منان بشیر وانی کی موت کے بعد اے ایم یو میں غائبانہ نماز جنازہ کی ناکام کوشش ، تین طلبہ معطل

جموں و کشمیر کے ہندوارہ میں جمعرات کے روز سیکورٹی فورسیز نے دو ملی ٹینٹوں کو مار گرایا۔ مارے گئے ملی ٹینٹوں میں سے ایک علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے ریسرچ اسکالر سے حزب المجاہدین کا ملی ٹینٹ بنا منان بشیر وانی بھی ہے۔

Oct 12, 2018 01:57 PM IST | Updated on: Oct 12, 2018 01:57 PM IST

جموں و کشمیر کے ہندوارہ میں جمعرات کے روز سیکورٹی فورسیز نے دو ملی ٹینٹوں کو مار گرایا۔ مارے گئے ملی ٹینٹوں میں سے ایک علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے ریسرچ اسکالر سے حزب المجاہدین کا ملی ٹینٹ بنا منان بشیر وانی بھی ہے۔ اطلاعات کے مطابق منان کے مارے جانے کے بعد  کچھ طلبہ نے اے ایم یو میں  اس کی غائبانہ نماز جنازه پڑھنے کی ناکام کوشش کی، جس پر ہنگامہ ہو گیا۔ اس کے بعد رولس توڑنے کے سبب تین طلبہ کو معطل کر دیا گیا۔  چار طالبہ کو وجہ بتاو نوٹس بھی جاری کیا گیا ہے۔

دراصل، سوشل میڈیا پر جعمرات کے روز ساڑھے تین بجے کینیڈی ہال میں غائبانہ نماز جنازہ کے منعقد ہونے کی اطلاع دی گئی تھی۔ مقرر وقت پر کشمیر کے تقریباََ 150 طلبہ جمع ہو گئے۔ سینئر طلبہ نے اس کی مخالفت کی۔ اطلاع ملتے ہی پروکٹوریل بورڈ بھی موقعہ پر پہنچا۔ اس دوران کشمیری طلبہ کی ان سے جھڑپ بھی ہوئی۔ اس کے بعد سکیورٹی فورسیز نے طلبہ کو وہاں سے ہٹا دیا۔

منان بشیر وانی کی موت کے بعد اے ایم یو میں غائبانہ نماز جنازہ کی ناکام کوشش ، تین طلبہ معطل

منان وانی ۔ فائل فوٹو ۔

واضح ہو کہ سینئر طلبہ کی مخالفت اور پروکٹوریئل بورڈ کی سمجھ داری سے حالات قابو میں رہے۔  چار طالبہ کو وجہ بتاو نوٹس جاری کیا گیا ہے۔ تاہم رولس توڑنے کے سبب تین طلبہ کو معطل کر دیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز