امریکہ نے سعودی عرب سمیت 8 مسلم اکثریتی ممالک پر لگائی یہ نئی پابندی

Mar 21, 2017 03:53 PM IST | Updated on: Mar 21, 2017 03:53 PM IST

واشنگٹن۔  امریکہ کی ٹرمپ حکومت نے 8 مسلم اکثریتی ممالک سے آ رہے طیاروں میں مسافروں پر سفر سے متعلق نئی پابندیاں لگائی ہیں۔ مصر، اردن، کویت، قطر، سعودی عرب، ترکی اور متحدہ عرب امارات سے آ رہے طیاروں میں مسافر لیپ ٹاپ، آئی پیڈ، کیمرے اور بہت سے دیگر الیکٹرانک سامان نہیں لا سکیں گے۔  یہ پابندی منگل سے شروع ہو رہی ہے۔ ٹرمپ انتظامیہ نے کہا ہے کہ یہ ایک عارضی انتظام ہے۔ پابندی صرف ان طیاروں سے سفر کر رہے مسافروں پر لاگو ہو گی  جو براہ راست ان ممالک سے اڑنے والے طیاروں سے امریکہ آ رہے ہیں۔  ماہرین کا کہنا ہے کہ ہو سکتا ہے کسی ممکنہ حملے کے خطرے کو دیکھتے ہوئے یہ پابندی عائد کی گئی ہو۔

نوبھارت ٹائمس کے مطابق، یہ پابندی کن وجوہات سے لگائی گئی ہے، یہ ابھی صاف نہیں ہو سکا ہے۔ امریکی سیکورٹی حکام نے اپنی طرف سے اس پابندی کی وجوہات کا انکشاف نہیں کیا ہے۔ رائل جارڈنین ائیر لائنز اور سعودی عرب کی سرکاری نیوز ایجنسی کی طرف سے جاری بیانات کے ذریعے اس پابندی کی معلومات ملی۔  امریکہ کے ایک افسر نے نیوز ایجنسی اے پی سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ یہ پابندی مصر، اردن، مراکش، کویت، قطر، ترکی کے ایک ایک ہوائی اڈے اور سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے دو دو ہوائی اڈوں سے امریکہ آنے والے بین الاقوامی ہوائی جہازوں پر لاگو ہوگی۔

امریکہ نے سعودی عرب سمیت 8 مسلم اکثریتی ممالک پر لگائی یہ نئی پابندی

علامتی تصویر: اے پی فوٹو

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز