امریکہ سے کیوبا کے دو سفارت کاروں کا اخراج

Aug 10, 2017 04:14 PM IST | Updated on: Aug 10, 2017 04:14 PM IST

واشنگٹن / ہوانا۔ امریکہ نے کیوبا کے دارالحکومت ہوانا میں امریکی سفارت خانے میں ملازمت کرنے والے اپنے ملازمین کے بیمار ہونے کے بعد یہاں واقع کیوبا سفارت خانے میں کام کرنے والے دو سفارتکاروں کو نکال دیا ہے۔ امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان هيتھر ناریٹ نے کل نامہ نگاروں کو بتایا کہ کیوبا میں ملازم امریکی ملازمین کے بیمار ہونے کی وجہ سے وطن واپس لوٹنے کے بعد گذشتہ 23 مئی کو کیوبا کے دو سفارت کاروں کو ان کے ملک بھیج دیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ امریکی عملے میں سماعت کی صلاحیت میں بھاری کمی سمیت کئی جسمانی مسائل پیدا ہو گئے تھے۔ ان کی میڈیکل جانچ چل رہی ہے لیکن اب تک مکمل طور پر واضح نہیں ہو سکا ہے کہ انہیں کون سی بیماری ہوئی ہے۔

محترمہ ناریٹ نے بتایا کہ امریکہ کو گزشتہ سال کے آخر میں ہوانا میں واقع سفارت خانے کے عملے میں اس طرح کی جسمانی مسائل کا پتہ چلا تھا۔ انہوں نے کہا، ’’ہمیں اس بیماری کی وجہ کے بارے میں صحیح علم نہیں ہے۔ اس میں کئی طرح کی علامات سامنے آئے ہیں۔ ہم اسے انتہائی سنجیدگی سے لے رہے ہیں اور اس کی جانچ کر رہے ہیں‘‘۔ امریکی حکومت کے ایک افسر نے بتایا کہ اس کے کئی ساتھی کارکن سننے کی صلاحیت میں کمی اور دیگر مسائل کی وجہ سے وطن لوٹ آئے۔ انہوں نے بتایا کہ کچھ ملازمین کو تو اتنا کم سنائی دینے لگا کہ انہیں سماعت کے آلات لگانے پڑے۔

امریکہ سے کیوبا کے دو سفارت کاروں کا اخراج

واضح ر ہے کہ تقریبا پانچ دہائی کی کشیدگی کے بعد 2015 میں امریکہ اور کیوبا کے درمیان سفارتی تعلقات بحال ہوئے تھے اور دونوں ممالک نے ایک دوسرے کے دارالحکومتوں میں سفارت خانے کھولے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز