جیٹلی کا امریکہ کے سامنے ایچ -1 بی ویزا کے سلسلے میں اپنے خدشات کا اظہار

Apr 21, 2017 09:56 PM IST | Updated on: Apr 21, 2017 10:56 PM IST

واشنگٹن: وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے امریکہ کی جانب سے ایچ -1 بی ویزا نظام کو سخت بنانے سے ہندوستانی پیشہ ور افراد کے متاثر ہونے کا مسئلہ امریکہ کے وزیر تجارت ویلبر راس کے سامنے اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ یہاں کی معیشت میں ہندوستانی پیشہ ور افراد کی شراکت اور ان کی خدمات کا ویزا نظام میں تبدیلی کے دوران خیال رکھا جانا چاہیے۔

امریکہ کے پانچ روزہ دورے پر آئے مسٹر جیٹلی نے جمعرات کو یہاں مسٹر راس کے ساتھ دو طرفہ اجلاس میں یہ مسئلہ اٹھایا۔ اس میں امریکی وزیر نے ہندوستان میں گڈس اینڈ سروس ٹیکس (جی ایس ٹی) کو لاگو کرنے کے لئے حکومت کی طرف سے کی گئی کوششوں اور اس سلسلے میں قوانین کو منظور کرانے کے لئے مسٹر جیٹلی کو مبارک باد پیش کی۔

جیٹلی کا امریکہ کے سامنے ایچ -1 بی ویزا کے سلسلے میں اپنے خدشات کا اظہار

ارون جیٹلی: فائل فوٹو

وزیر خزانہ نے امریکہ کے حالیہ ایگزیکٹو آرڈر کے تحت ایچ -1 بی ویزا نظام کو سخت بنانے کے امکان کے پیش نظر یہ مسئلہ اٹھایا۔ انہوں نے امریکی معیشت میں ہندوستانی پیشہ ور افراد کی قابل ذکر شراکت کا حوالہ دیتے ہوئے امید ظاہر کی کہ ایسا کوئی بھی فیصلہ کرنے سے قبل امریکی انتظامیہ اس پہلو کو ذہن میں رکھے گی۔

دونوں رہنماؤں نے ہند-امریکہ کے اقتصادی تعلقات کی مضبوطی اور عرصے سے جاری تعاون پر زور دیا۔ وزیر خزانہ نے گزشتہ تین سال میں ہندوستان میں کی گئی اصلاحات اور معیشت کے بارے میں معلومات فراہم کرائی۔ امریکی وزیر تجارت نے جی ایس ٹی پر قانون بنانے کے لئے وزیر خزانہ کو مبارکباد پیش کی۔ ملاقات کے دوران وزیر خزانہ ارون جیٹلی کے ساتھ ہندوستان کے سفیر نوتیج سرنا اور اقتصادی معاملات کے سکریٹری شکتی کانتا داس بھی موجود تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز