جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 کی منسوخی: پاکستانی عوام کو احمقوں کی جنت میں نہ رہنے کا مشورہ

مظفرآباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے اقوام متحدہ میں کوئی پاکستان کے لیے ہار لے کر نہیں کھڑا، مسئلہ کشمیرپرسلامتی کونسل کا کوئی بھی مستقل رکن پاکستان کی راہ میں رکاوٹ بن سکتاہے۔

Aug 13, 2019 10:14 AM IST | Updated on: Aug 13, 2019 10:18 AM IST
جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 کی منسوخی: پاکستانی عوام کو احمقوں کی جنت میں نہ رہنے کا مشورہ

پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی: فائل فوٹو

جموں وکشمیر سے آرٹیکل 370 اور 35 اے کی منسوخی کے بعد بوکھلائے پاکستان کواب اپنی کمزوری کا احساس ہوگیاہے۔ پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے پاکستانی عوام کواحمقوں کی جنت میں نہ رہنے کا مشورہ دیا۔عید الاضحیٰ کے موقع پرمظفرآباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے اقوام متحدہ میں کوئی پاکستان کے لیے ہار لے کر نہیں کھڑا، مسئلہ کشمیرپرسلامتی کونسل کا کوئی بھی مستقل رکن پاکستان کی راہ میں رکاوٹ بن سکتاہے۔

مظفر آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ امہ کی بات توبہت کی جاتی ہے مگر، امہ کے محافظوں کے مفادات ہندوستان سے منسلک ہیں۔انہوں نے میڈیا نمائندوں کے سوالات کے جوابات دیتے ہوئے کہا کہ ہندوستان اس وقت 1 ارب کی مارکٹ ہیں۔ اس لیے یہاں بھاری سرمایہ کاری کے مواقع ہیں۔ اسی لیے کوئی بھی رکن پاکستان کے لیے روکاٹ پیدا کرسکتاہے۔ انہوں نے دعویٰ کیاہے چین نے جموں وکشمیر کے معاملہ پر پاکستان کا ساتھ دینے کا وعدہ کیاہے۔

پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیرپرسکیورٹی کونسل میں جانا سب سے اہم فیصلہ ہےاور چین نے کشمیریوں کامقدمہ پیش کرنے میں مکمل تعاون کا یقین دلایا ہے۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں پاکستان کو کامیابی ملنے کے امکانات نہ کے برابرہیں۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہم یاسین ملک کااحترام کرتے ہیں اوران کی حالت بھی ٹھیک نہیں ہے۔انہوں نے سوال کرتے ہوئے کہاکہ ہندوستان کلبھوشن یادیو کو اہل خانہ کو اس سے ملانے کا مطالبہ کرتا ہے لیکن خود یاسین ملک کی اہلیہ کوویزا کیوں جاری نہیں کرتا؟

Loading...