کوہلی کی مانگ ہوئی منظور ! اب بیرونی ممالک دورے پر زیادہ وقت رکیں گی بیویاں

بی سی سی آئی نے وراٹ کوہلی کی اس گزارش کو قبول کر لیا ہے جس میں بیرونی ممالک دورے پر بیویوں کو ٹیم کے ساتھ زیادہ وقت تک رہنے کی چھوٹ دینے کی مانگ کی گئی تھی۔

Oct 12, 2018 06:14 PM IST | Updated on: Oct 12, 2018 06:15 PM IST

بی سی سی آئی کو چلا رہی سی او اے نے کپتان وراٹ کوہلی سمیت ٹیم انڈیا کے تمام شادی شدہ کھلاڑیوں کو ایک اچھی خبر دی ہے۔ بی سی سی آئی نے کوہلی کی اس گزارش کو قبول کر لیا ہے جس میں بیرونی ممالک دورے پر بیویوں کو ٹیم کے ساتھ زیادہ وقت تک رہنے کی چھوٹ دینے کی مانگ کی گئی تھی۔

حالانکہ سی او اے نے پورے دورے میں بیویوں کو ساتھ رکھنے کی اجازت دینے کا فیصلہ کرنے کے بجائے بیرونی ممالک ٹیموں کے ماڈل پر چلنے کا فیصلہ کیا۔ جس میں ہر دورے کے وقت کے مطابق فیصلہ لیا جا تا ہے۔ ممبئی مرر کی خبر کے مطابق بدھ کو حیدر آباد میں ہوئی بی سی سی آئی کی میٹنگ میں فیصلہ ہوا کہ اس مسئلے پر آسٹریلیا جیسی ٹیم کے  قوانین پر عمل کیا جائے گا۔ کرکٹ آسٹریلیا اس مسئلے پر کھلاڑیوں کی ایسوسی ایشن کے ساتھ 'صلاح  مشورہ کرکے بیویوں کے ٹھہرنے کا طے شدہ وقت طے  کرتا ہے جسے" فیملی پیرئیڈ " کہا جاتاہے۔

کوہلی کی مانگ ہوئی منظور ! اب بیرونی ممالک دورے پر زیادہ وقت رکیں گی بیویاں

بی سی سی آئی نے کوہلی کی اس گزارش کو قبول کر لیا ہے جس میں بیرونی ممالک دورے پر بیویوں کو ٹیم کے ساتھ زیادہ وقت تک رہنے کی چھوٹ دینے کی مانگ کی گئی تھی۔

آسٹریلیا کی ٹیم اس وقت پاکستان کے ساتھ سیریز کھیلنے کیلئے دبئی میں یہ محض دو ٹیسٹ کی چھوٹی سیریز ہے لہذا ان دنوں ٹیسٹ کے دوران کنگارو کھلاڑیوں کی بیویاں ان کےساتھ ہیں لیکن جب دورہ طویل ہوتا ہے تو آپسی سمجھ کے ساتھ وقت طے کر دیا جاتا ہے۔

حالانکہ یہ بھی طے کیا گیا ہے کہ 2019 میں ہونے والے ورلڈ کپ میں کرکٹروں کی بیویاں سیمی فائنل تک کا سفر طے ہونے سے پہلے کھلاڑیوں کے ساتھ نہیں رہ سکیں گی۔ ایسا ہی قانون 2015 کے ورلڈ کپ کے دوران بھی اپنایا گیا تھا۔

بہر حال ہندستانی ٹیم کا اگلا دورہ آسٹریلیا کا ہوگا۔ یہ ایک طویل دورہ ہےاور دیکھنا ہوگا کہ بی سی سی آئی کتنے دن تک بیویوں کو ساتھ رہنے کی اجازت دیتی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز