برکس اجلاس سے ٹھیک پہلے ڈوکلام سے ہندوستان اور چین کی افواج کا انخلاء شروع

Aug 28, 2017 01:27 PM IST | Updated on: Aug 28, 2017 01:34 PM IST

نئی دہلی۔ سکم کی سرحد کے نزدیک ڈوکلام علاقے میں ہند۔چین افواج کے مابین گزشتہ تقریباً ڈھائی ماہ سے جاری تعطل ختم ہوگیا ہے۔ دونوں ممالک کی وہاں سے اپنی اپنی فوجیں ہٹانے پر مفاہمت کے ساتھ ہی اس بات پر عمل شروع ہوگیا ہے۔ وزارت خارجہ نے آج یہاں ایک بیان میں کہاکہ حالیہ ہفتوں میں ہندستان اور چین کے مابین ڈوکلام کے واقعہ پر سفارتی بات چیت ہوئی جس میں ہندستان اپنی تشویش اور مفادات کو چین کو واقف کرانے میں کامیاب رہا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ اس بنیاد پر ڈوکلام خطہ میں فوجیوں کو آمنے سامنے سے ہٹانے کے سلسلے میں مفاہمت ہوئی اور اب اس پر عمل شروع ہوگیا۔

ہندستانی فوج کے ذرائع نے بھی بتایا کہ ڈوکلام سے دونوں ممالک کے فوجیوں کو ہٹانے کا کام شروع ہوگیا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی برکس سربراہ کانفرنس میں شرکت کیلئے اگلے ہفتہ ہونے والے چین دورے سے قبل اس تنازعہ کا حل ہوجانا ہندستانی اسٹریٹیجی کی کامیابی سمجھی جا رہی ہے۔

برکس اجلاس سے ٹھیک پہلے ڈوکلام سے ہندوستان اور چین کی افواج کا انخلاء شروع

خبروں کے مطابق، ڈوکلام سے ہندوستان کی فوج واپس آ رہی ہے۔

واضح رہے کہ جون میں بھوٹان اور چین کے مابین متنازعہ ڈوکلام خطہ میں چین کی جانب سے یکطرفہ طور پر سڑک کی تعمیر کی کوشش پر بھوٹانی فوج نے اعتراض کیا تھا اور چینی فوج کے اسے نہ ماننے پر بھوٹانی فوج کے اشارے کے بعد ہندستانی فوج نے 16 جون کو آگے بڑھ کر چینی فوج کو روک دیا تھا۔

تقریباً ڈھائی ماہ میں دونوں ممالک کے فوجیوں کے آمنے سامنے کھڑے رہنے سے دنیا کی دو ابھرتی بڑی اقتصادی طاقتوں کے مابین کافی کشیدگی پیدا ہوگئی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز