صومالیہ میں ہوٹل پر دہشت گردانہ حملہ ، 29 افراد ہلاک

Oct 29, 2017 08:59 PM IST | Updated on: Oct 29, 2017 09:00 PM IST

موغادیشو : صومالیہ کے دارالحکومت موغادیشو میں ایک مشہور ہوٹل کے باہر بم دھماکے اور اس کے 12 گھنٹے تک جاری رہنے والی جھڑپوں میں کم ازکم 29 افراد ہلاک اور 30 سے زائد زخمی ہوگئے ، جہاں ہوٹل کی عمارت کے اندر دہشت گردوں نے درجنوں افراد کو یرغمال بنا لیا تھا۔ پولس نے بتایا کہ دہشت گرد حملہ آور ہوٹل کےباہر دھماکہ کرنے کے بعد ہوٹل کی عمارت کے اندر داخل ہوگئے اور فائرنگ کرکے درجنوں افراد کو یرغمال بنالیا تھا، جن کو تقریبا 12 گھنٹے کی جھڑپ کے بعد ختم کردیا گیا۔

انتہاپسند وں کے اس حملے سے یہ ثابت ہوگیا کہ دہشت گرد صومالیہ کے دارالحکومت میں بھی ہلاکت خيز حملے کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ اس سے پہلے صومالیہ کے دارالحکومت میں دو ہفتے قبل بھی ایک ہوٹل میں دو بم دھماکے ہوئے تھے، جن میں 350 سے زائد افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ موغادیشو کے ناسا ہیبالود ہوٹل میں ہفتہ کے روز ہونے والے تازہ دھماکے کی ذمہ داری دہشت گرد تنظیم الشہاب نے قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے جنگجو ہوٹل کے اندر موجود ہیں۔

صومالیہ میں ہوٹل پر دہشت گردانہ حملہ ، 29 افراد ہلاک

صومالیہ میں دھماکہ کی ایک تصویر : فائل فوٹو

پولس افسر عبداللہ نور نے رائٹر کو بتایا کہ مجھے یقین ہے کہ اب تک اس حملے میں 29 لوگوں کی موت ہوئی ہے اور ہلاک شدگان کی تعداد بڑھنے کا خدشہ ہے۔ انہوں نے بتایا کہ مہلوکین میں کم سے کم 12 پولس افسران شامل ہيں۔ حملہ آوروں نے ایک خاتون کا سر قلم کرکے ان کے تین بچوں کو گولی ماردی ہے۔ جھڑپ میں تین جنگجوؤں کو زندہ پکڑ لیا گیا ہے۔  واضح رہے کہ یہ دہشت گردانہ حملہ ہفتہ کے روز شام پانچ بجے شروع ہوا تھا، جب ایک کاربم دھماکہ میں ناشابولڈ ہوٹل کے دروازے کو توڑتے ہوئے دہشت گرد حملہ آور اندر داخل ہوئے تھے۔ یہ ہوٹل صدارتی محل کے نزدیک ہی واقع ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز