جھارکھنڈ : مڈ ڈے میل کی 100کروڑ کی رقم بلڈر کے کھاتہ میں ہوئی ٹرانسفر ، دو بینک ملازمین معطل ، تفتیش شروع

Sep 27, 2017 09:59 PM IST | Updated on: Sep 27, 2017 09:59 PM IST

رانچی: جھارکھنڈ کی راجدھانی رانچی کے دھروا میں واقع اسٹیٹ بینک آف انڈیا کی برانچ سے 100کروڑ روپے کی سرکاری رقم کو بلڈر سنجے تیواری کے کھاتے میں ڈالنے کے معاملے میں بینک ملازمین کے رول پر شبہ ہے۔ سرکاری ذرائع کے مطابق معاملہ سامنے آنے کے بعد بینک کی طرف سے اس کی تفتیش مرکزی تفتیشی بیورو(سی بی آئی) سے کرانے کے لئے خط بھی لکھا گیا ہے۔ حالانکہ معاملہ 25کروڑ سے زیادہ ہونے کی و جہ سے بیورو کے مقامی دفتر نے اس کی اطلاع کولکاتہ دفتر کو دی ہے۔

وہیں دوسری طرف جھارکھنڈ حکومت کے ذریعہ مڈڈے میل کے عوض تقریباَ َ100کروڑ روپے کی رقم بلڈر کے کھاتے میں اچانک منتقل ہوجانا سنگین سوال کھڑا کررہا ہے۔ اگر اس میں بلڈر کا کوئی رول نہیں ہے تو اتنی بڑی رقم اچانک کھاتہ میں آنے پر اسے بینک کو مطلع کرنا چاہئے تھا اور اتنی بڑی رقم غلطی سے کسی دوسرے کے اکاونٹ میں منتفل ہوجانے پر بینک ملازمین جو دعوے کررہے ہیں ان میں بھی آپس میں کوئی میل نظر نہیں آرہا ہے۔

جھارکھنڈ : مڈ ڈے میل کی 100کروڑ کی رقم بلڈر کے کھاتہ میں ہوئی ٹرانسفر ، دو بینک ملازمین معطل ، تفتیش شروع

demo pic

معاملہ سامنے آنے کے بعد بینک نے خود ہی 100کروڑ روپے کی رقم مڈڈے میل کے کھاتوں میں جمع کردےئے ہیں اور سی بی آئی سے تفتیش کرانے پر خط لکھا ہے۔خیال رہے کہ پانچ ستمبر کو ایس بی آئی دھروا برانچ کی طرف سے سرکاری مڈڈے میل کی جمع رقم میں سے 100کروڑ ایک لاکھ روپے کو پانچ ستمبر کو بلڈر سنجے تیواری کے اکاونٹ میں منتقل کردئے گئے۔ اس معاملہ میں دو بینک ملازمین انل اراوں اور کمل جیت کھنہ کو معطل کردیا گیا ہے جبکہ بلڈر معاملہ سامنے کے بعد سے لاپتہ ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز