جھارکھنڈ : پنچایت کے فیصلہ سے ناراض عاشق نے اجتماعی آبروریزی کی متاثرہ معشوقہ کو زندہ جلایا

جھارکھنڈ کے چترا میں پنچایت کے فیصلہ سے ناراض نوجوانوں نے اجتماعی آبروریزی کی متاثرہ کی پہلے پٹائی کی اور پھربعد میں زندہ جلا کر مار ڈالا ۔

May 04, 2018 09:27 PM IST | Updated on: May 04, 2018 09:27 PM IST

چترا : جھارکھنڈ کے چترا میں پنچایت کے فیصلہ سے ناراض نوجوانوں نے اجتماعی آبروریزی کی متاثرہ کی پہلے پٹائی کی اور پھربعد میں زندہ جلا کر مار ڈالا ۔ پولیس نے کیس درج کرکے جانچ شروع کردی ہے۔ در اصل چترا کے اٹکھوری تھانہ حلقہ کے راجا کیندوا گاوں میں نابالغ لڑکی کی اس کے عاشق نے ہی آبروریزی کی اور اہل خانہ کو اس کا علم ہونے کے بعد جمعہ کی صبح میں پنچایت بلائی گئی۔

تقریبا تین گھٹنے تک چلی پنچایت میں ملزم عاشق پر 50 ہزار روپے کا جرمانہ عائد کیا گیا ۔ حالانکہ نابالغ کے اہل خانہ نے تین لاکھ روپے کا مطالبہ کیا تھا ، مگر مکھیا نے 50 ہزار کے ساتھ ساتھ جسمانی سزا کے طور پر 101 مرتبہ اٹھک بیٹھک کا بھی فیصلہ سنایا ۔ یہ فیصلہ عاشق کو ناگوار گزرا اور حیوانیت کی ساری حدیں پار کرتے ہوئے اس نے اپنی ہی معشوقہ کو زندہ جلانے کی فیصلہ کیا۔

جھارکھنڈ : پنچایت کے فیصلہ سے ناراض عاشق نے اجتماعی آبروریزی کی متاثرہ معشوقہ کو زندہ جلایا

بعد ازاں عاشق اپنے تین دیگر ساتھیوں کے ساتھ اپنی معشوقہ کے گھر پہنچا اور معشوقہ کو زندہ جلادیا ۔ اطلاع ملنے پر چار گھنٹے کے بعد ایس پی اکھلیش بی واریئر اور دیگر پولیس اہلکاروں کی ٹیم جائے واقعہ پر پہنچی ۔ اب معاملہ درج کرکے اس کی جانچ شروع کردی گئی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز