مدھیہ پردیش میں اب جیوتشی کریں گے مریضوں کا علاج اور نکالیں گے ان کی پریشانیون کا حل

Jul 21, 2017 06:16 PM IST | Updated on: Jul 21, 2017 06:16 PM IST

بھوپال : مدھیہ پردیش میں اب جیوتشی نیند نہ آنے اور ڈپریشن جیسی بیماریوں کا علاج کریں گے ۔ حیران نہ ہوں ۔ پردیش کے پتنجلی سنسکرت سنستھانم اس کی شروعات کرنے جا رہا ہے ۔ اب ڈاکٹروں کے ساتھ ساتھ حکومت مریضوں کوجیوتشیوں کے حوالے کرنے جا رہی ہے ۔ حیرت کی بات ہے کہ وزیر صحت کو اس بارے میں معلومات تک ہی نہیں ہے۔

مدھیہ پردیش کے پتنجلی سنسکرت سنستھانم ایک نئے تجربے کو لے کرتنازعات کا شکار ہوگئی ۔ دراصل وہ لاکھوں لوگوں کی روزمرہ کی بیماریوں اور مشکلات کو حل کرنے کے لئے سنستھان جیوتش اور واستو کی اوپی ڈی لگانے جا رہا ہے۔ یہ اوپی ڈی ستمبر سے شروع ہو گی اور اس کی فیس 5 روپے ہوگی ۔ اب سوال یہ ہے کہ کیا لوگوں کی بیماریوں اور مسائل کا علاج جیوتش سے ممکن ہے ۔ سنستھان کے حکام کا کہنا ہے کہ قدیم طریقہ کار سے یہ سب ممکن ہے ۔ نیند نہ آنے اور ڈپریشن جیسی پریشانیوں کا علاج ایک زمانے میں اسی سے کیا جاتا تھا ۔ یوگا کی طرح جیوتش بھی ایک طرح کی سائنس ہے۔اگرچہ حکام کے مطابق یہ اوپی ڈی نہیں بلکہ ایک مشاورتی مرکز کی طرح کام کرے گا ۔

مدھیہ پردیش میں اب جیوتشی کریں گے مریضوں کا علاج اور نکالیں گے ان کی پریشانیون کا حل

وہیں وزیر صحت رستم سنگھ نے اس طرح کی اوپی ڈی سے کافی ناراضگی ظاہر کی ہے ۔ رستم سنگھ کے مطابق یہ انسٹی ٹیوٹ محکمہ صحت سے وابستہ نہیں ہے۔ ایسے میں وہ اس طرح علاج کیسے کر سکتا ہے، یہ سوال کھڑا ہوتا ہے ۔ رستم سنگھ کے مطابق انہیں اس طرح کے مرکز کی کوئی معلومات نہیں ہے ۔ انہوں نے خود ہی سوال کھڑا کیا کہ جو سنستھان محکمہ تعلیم کے تحت کام کرتا ہے ، وہ کسی بیماری کا علاج کس طرح کر سکتا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز