گینگ ریپ کے معاملہ میں تین انسپکٹراور دو سب انسپکٹر معطل ، سٹی سپرنٹنڈنٹ کا تبادلہ

Nov 03, 2017 09:24 PM IST | Updated on: Nov 03, 2017 09:24 PM IST

بھوپال: مدھیہ پردیش کے دارالحکومت بھوپال میں اجتماعی آبروریزی کے سنسنی خیز معاملے میں لاپرواہی برتنے پر آج تین تھانوں کے سٹی انسپکٹر اور دو سب انسپکٹر (ایس آئی) کو معطل کر دیا گیا اور ایک پولیس سپرنٹنڈنٹ کا تبادلہ کرکے پولیس ہیڈکوارٹر میں تعینات گیا ہے۔ اس معاملے کی تحقیقات کے لئے خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) قائم کی گئی ہے۔

آئی جی (قانون و انتظام) مكرند دیوسكر نے یہاں میڈیا کو یہ اطلاع دی۔ انہوں نے بتایا کہ حبیب گنج کے سٹی انسپکٹر روندر یادو، ایم پی نگر کے سٹی انسپکٹر سنجے سنگھ بیس اور گورنمنٹ ریلوے پولیس (جی آر پی) کے انسپکٹر موہت سکسینہ اور ایم پی نگر کے ایس آئی آر این ٹیكام اور جی آر پی کے ایس آئي اوئیکو کو معطل کر دیا گیا ہے، جبکہ ایم پی نگر کے سی ایس پی کلونت سنگھ کا ہٹا کر پولیس ہیڈکوارٹر بھیج دیا گیا ہے۔

گینگ ریپ کے معاملہ میں تین انسپکٹراور دو سب انسپکٹر معطل ، سٹی سپرنٹنڈنٹ کا تبادلہ

علامتی تصویر

انہوں نے بتایا کہ معاملے کی تحقیقات کے لئے خواتین سے متعلق جرائم کے پولیس ڈپٹی -انسپکٹر جنرل سدھیر لاڈ کی قیادت میں ایس آئی ٹی قائم کی گئي ہے۔

مسٹر دیوسکر نے کہا کہ اس معاملے میں چار افراد کو حراست میں لیا گیا ہے۔ شناخت ہونے کے بعد، ان میں سے تین کو عدالت میں پیش کیا گیا اور جیل بھیج دیا گیا ۔

واضح ر ہے کہ 31 اکتوبر کی شام ساڑھے سات بجے کوچنگ سینٹر سے لوٹتے وقت اسکولی طالبہ کے ساتھ حبیب گنج ریلوے اسٹیشن کے آؤٹر سیکشن پر چار بدمعاشوں نے تین گھنٹے سے زیادہ وقت تک اس کی اجتماعی آبروریزی کی تھی۔ متاثرہ لڑکی نے اس واقعہ کی اطلاع اپنے خاندان کو دی،۔ اس کے والدین دونوں پولیس میں ہیں۔ انہوں نے تھانے میں اس سلسلے میں ایف آئی آر درج کرانے پہنچے تھے۔

الزام ہے کہ تین تھانوں کے اسٹاف نے سرحدی تنازع کی وجہ سے مقدمہ درج کرنے میں ٹال مٹول کیا۔ جس کی وجہ سے متاثرہ لڑکی ایف آئی آر درج کرانے کے لئے اپنے اہل خانہ کے ساتھ ایک پولیس سٹیشن سے دوسرے پولس اسٹیشن میں بھٹکتی رہی۔ بعد میں سینئر حکام کے مداخلت سے یہ معاملہ جی آر پی کے پولیس اسٹیشن میں درج کیا گیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز