پنچایت نے آبروریزی کے ملزمین سے وصول کیا 30 ہزار روپے کا جرمانہ ، پھر پورے گاوں کو کھلایا مٹن

چھتیس گڑھ کے آدیواسی اکثریتی ضلع جشپور میں ایک شرمناک واقعہ سامنے آیا ہے ۔ جشپور کے منورا کے ایک گاوں میں تین بچیوں کی آبروریزی کے بعد گاوں میں جشن منانے کی اطلاع پولیس کو ملی ہے۔

Jul 11, 2018 05:16 PM IST | Updated on: Jul 11, 2018 05:16 PM IST

چھتیس گڑھ کے آدیواسی اکثریتی ضلع جشپور میں ایک شرمناک واقعہ سامنے آیا ہے ۔ جشپور کے منورا کے ایک گاوں میں تین بچیوں کی آبروریزی کے بعد گاوں میں جشن منانے کی اطلاع پولیس کو ملی ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ گاوں والوں نے جشن کے دوران مٹن بناکر کھایا ۔ اطلاع ملنے کے بعد بدھ کو پولیس کی ایک ٹیم گاوں کیلئے روانہ ہوئی۔

جشپور کے منورا کے ایک گاوں میں تین بچیوں کی آبروریزی کی بات سامنے آئی ہے۔ ذرائع کے مطابق پنچایت نے متاثرہ فریق کو پولیس تھانہ جانے سے بھی روک دیا ۔ پنچایت نے خود ایک میٹنگ کی اور اپنا فیصلہ سنادیا ۔ پنچایت کے فیصلہ کے بعد ملزم فریق سے بطور جرمانہ 30 ہزار روپے لئے گئے اور اس رقم سے مٹن منگوایا گیا اور پورے گاوں کی دعوت کی گئی ۔ گاوں نے مٹن منگوا کر کھایا اور باقی ماندہ رقم آپس میں تقسیم کرلی۔

پنچایت نے آبروریزی کے ملزمین سے وصول کیا 30 ہزار روپے کا جرمانہ ، پھر پورے گاوں کو کھلایا مٹن

علامتی تصویر

اس واقعہ سے متعلق ایک ویڈیو بھی وائرل ہورہا ہے ۔ ویڈیو میں ایک شخص واقعہ کی جانکاری دے رہا ہے ۔ اس شخص کو متاثرہ بچیوں میں سے ایک کا والد بتایا جارہا ہے۔ ذرائع کے مطابق کچھ دن پہلے متاثرہ بچیوں میں سے ایک کے والد نے گاوں کے ہی کچھ نوجوانوں کے ساتھ بچیوں کو قابل اعتراض حالت میں دیکھا ، جس کے بعد یہ معاملہ پنچایت کے پاس پہنچا۔

اس سلسلہ میں ایک پنچایت بلائی گئی ۔پنچایت میں سبھی برادری کے لوگ شامل ہوئے ۔ اس میں ملزم فریق بھی موجود تھا ۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق پنچایت نے فیصلہ سنایا کہ متاثرہ فریق کو 10-10 ہزار روپے معاوضہ کے طور پر دئے جائیں ۔ تینوں ملزم نوجوانوں کے والد نے یہ رقم متاثرہ فریق کو دیدی ۔ اس کے بعد اس رقم سے مٹن منگوایا گیا اور پورے گاوں کی دعوت کی گئی ۔ بعد ازاں باقی ماندہ پیسوں کو 45 افراد میں 485 روپے فی کس کے حساب سے تقسیم کردیا گیا ۔

ادھر جشپور کے باغیچہ علاقہ کی ایس ڈی او پی کا کہنا ہے کہ اس طرح کی کوئی شکایت پولیس کے پاس نہیں پہنچی ہے ۔ پھر بھی اطلاع کی بنیاد پر بدھ کو ٹی آئی کی قیادت میں پولیس کی ایک ٹیم گاوں بھیجی گئی ہے۔ دور دراز کا علاقہ ہونے کی وجہ سے وہاں نیٹ ورک نہیں ہے ، اس لئے ٹیم سے رابطہ نہیں ہوپارہا ہے۔ ٹیم کے واپس آجانے کے بعد ہی اس وقعہ کی حقیقت کا علم ہوسکے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز