آنکھوں دیکھا حال: جوان نے کہا، اچانک 300 نکسلی برسانے لگے گولیاں

Apr 25, 2017 08:29 AM IST | Updated on: Apr 25, 2017 08:30 AM IST

رائے پور۔ چھتیس گڑھ کے نکسل متاثرہ ضلع سکما میں پیر کو نکسلیوں نے سی آر پی ایف کی ٹیم پر گھات لگا کر حملہ کر دیا، جس میں 25 جوانوں کی موت ہو گئی اور چھ جوان زخمی ہو گئے۔ چھتیس گڑھ کے سینئر پولیس حکام نے بتایا کہ سکما ضلع کے چنتاگپھا تھانہ علاقہ کے تحت بركاپال گاؤں کے قریب نکسلیوں نے سی آر پی ایف کی ٹیم پر حملہ کر دیا۔ چنتاگپھا تھانہ علاقے میں سی آر پی ایف کی 74 ویں بٹالین کی دو کمپنیوں کو آج بركاپال سے چنتاگپھا کے وسط بن رہے سڑک کی حفاظت میں روانہ کیا گیا تھا۔ ٹیم جب بركاپال سے تقریبا ڈیڑھ کلومیٹر کے فاصلے پر تھی تبھی نکسلیوں نے پولیس ٹیم پر فائرنگ شروع کر دی۔

حملے میں زخمی جوان شیر محمد نے بتایا کہ وہ جب سڑک کی حفاظت میں تھے، تب تقریبا تین سو نکسلیوں نے اچانک فائرنگ شروع کر دی جن میں خواتین نکسلی بھی شامل تھیں۔ اس کے بعد پولیس ٹیم نے بھی جوابی کارروائی کی۔ نکسلی جدید ہتھیاروں سے لیس تھے۔ زخمی جوان نے بتایا کہ سیکورٹی فورسز کے جوانوں نے نکسلیوں کو منہ توڑ جواب دیا۔ جوان نے دعوی کیا ہے کہ اس تصادم کے دوران تقریبا ایک درجن نکسلی بھی مارے گئے ہیں۔

آنکھوں دیکھا حال: جوان نے کہا، اچانک 300 نکسلی برسانے لگے گولیاں

چھتیس گڑھ کے پولیس ڈائریکٹر جنرل اے این اپادھیائے نے بتایا کہ صبح جوانوں کو گشت کرنے کے لئے روانہ کیا گیا تھا۔ ٹیم میں تقریبا ایک سو جوان تھے۔ ٹیم جب 12 بجے بركاپال کے قریب تھی تبھی نکسلیوں نے پولیس کی ٹیم پر فائرنگ شروع کر دی جس کے بعد سیکورٹی فورسز کے جوانوں نے بھی کارروائی کی۔ دونوں طرف سے تقریبا تین گھنٹے تک فائرنگ ہوئی۔

اپادھیائے نے بتایا کہ پولیس ٹیم کی کوشش تھی کہ زخمی جوانوں کو وہاں سے جلد باہر نکالا جائے جس سے ان کی جان بچائی جا سکے۔ علاقے میں اب بھی تلاشی مہم جاری ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز