یشونت سنہا کے ٹوئٹ پر خاموش نہیں توڑ رہے جینت، باپ نے بیٹے کی حرکت پرجتایا افسوس

موب لنچنگ کے ملزمین کو مالا پہناکر تنقید کا سامنا کررہے جینت سنہا نے اپنے والد یشونت سنہا کے ذریعہ کئے گئے ٹوئٹ پرانہوں نے کوئی جواب نہیں دیا اور میڈیا سے بات کرنے سے انکارکردیا۔

Jul 08, 2018 06:52 PM IST | Updated on: Jul 08, 2018 07:25 PM IST

ہزاری باغ کے ممبرپارلیمنٹ اور مرکزی وزیر جینت سنہا ان دنوں سرخیوں میں ہیں۔ کبھی رائے گڑھ کے موب لنچنگ کے ملزمین کو مالا پہنانے کو لے کرسرخیوں میں ہیں تو کبھی ان کے والد یشونت سنہا کے ذریعہ کئے گئے ٹوئٹ کو لے کر۔ ان کے والد یشونت سنہا کے ذریعہ کئے گئے ٹوئٹ کو لے کر جب جینت سنہا سے بات کرنے کی کوشش کی گئی تو انہوں میڈیا  سے بات کرنے سے انکار کردیا۔

یشونت سنہا نے جو ٹوئٹ کیا ہے، اس سے لوگ سجھ نہیں پارہے ہیں کہ آخر باپ اور بیٹے کے درمیان کیا چل رہا ہے۔ یشونت سنہا کے ٹوئٹ پرجب میڈیا ملازمین نے جینت سنہا سے ان کا ردعمل جاننے کی کوشش کی تو انہوں نے کہا کہ ابھی بوتھ کمیٹی کی میٹنگ ہے، اس میں جانے دیجئے۔

یشونت سنہا کے ٹوئٹ پر خاموش نہیں توڑ رہے جینت، باپ نے بیٹے کی حرکت پرجتایا افسوس

مرکزی وزیر جینت سنہا: فائل فوٹو

جینت سنہا یہ کہتے ہوئے نکل گئے۔ یعنی وہ واضح طور پر کیمرے سے بچتے نظرآئے۔ بہرحال اس معاملے پر جینت سنہا نے اپنا کوئی ردعمل ظاہر کرنے سے بھی انکار کردیا۔  واضح رہے کہ سابق مرکزی یشونت سنہا نے ہفتہ کے روز ٹوئٹ کیا ہے کہ وہ اس بات سے خوش نہیں ہیں کہ ان کے بیٹے جینت سنہا نے جھارکھنڈ میں رائے گڑھ موب لنچنگ معاملے کے 8 ملزمین کا مالا پہنا کر استقبال کیا تھا۔ انہوں نے ٹوئٹ کیا کہ وہ اپنے بیٹے کے قدم سے اتفاق نہیں رکھتے۔

یشونت سنہا نےٹوئٹ کیا "پہلے میں لائق بیٹے کا نالائق باپ تھا، لیکن رول میں تبدیلی آچکی ہے۔ ایسا ٹوئٹرپرلوگ کہہ رہے ہیں۔ میں اپنے بیٹے کے فیصلے سے اتفاق نہیں رکھتا ہوں، لیکن مجھے معلوم ہے کہ اس کے بعد بھی ٹوئٹرپرتوہین ہوگی۔ آپ کبھی نہیں جیت سکتے"۔

واضح رہے کہ مرکزی وزیرجینت سنہا نے جمعہ کورائے گڑھ لنچنگ معالے کے 8 ملزمین کا مالا پہناکراستقبال کیا تھا۔ گزشتہ سال 27 جون کو تقریباً 100 گئورکشکوں کی بھیڑنے جانورتاجرعلیم الدین انصاری کو ہزاری باغ ضلع کے رام گڑھ میں دن دہاڑے مار ڈالا تھا۔

جینت سنہا ہزاری باغ لوک سبھا سیٹ سے ممبرپارلیمنٹ ہیں۔ بھیڑ کے ذریعہ پیٹ پیٹ کر قتل کئے جانے کے اس معاملے میں فاسٹ ٹریک عدالت نے ریکارڈ پانچ ماہ میں سماعت کرتے ہوئے اس سال 21 مارچ کو 11 ملزمین کوعمر قید کی سزا سنائی تھی۔

مرکزی وزیر جینت سنہا نے اس معاملےمیں پولیس جانچ پر سوال اٹھائے ہیں اورسی بی آئی جانچ کا مطالبہ کیا ہے۔ فاسٹ ٹریک کورٹ سے سزا پانےکے بعد سبھی ملزمین نے جھارکھنڈ ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا تھا۔ یہاں سے 8 ملزمین کو 29 جون کو ضمانت مل گئی۔ بدھ کو یہ لوگ جے پرکاش نارائن سینٹرل جیل سے باہر آئے تھے۔ یہاں سے یہ سیدھے جینت سنہا کے گھر گئے تھے، جہاں پروزیرنے انہیں مالا پہناکر استقبال کیا۔ یہ لوگ بی جے پی اوبی سی مورچہ کے صدر امردیپ یادو کی قیادت میں سنہا کے گھر گئے تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز