منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ کے ذریعہ شروع کی گئی مفت کمپیوٹر کی تعلیم

May 23, 2017 06:07 PM IST | Updated on: May 23, 2017 06:07 PM IST

بھوپال ۔منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ کے ذریعہ شروع کی گئی مفت کمپیوٹر تعلیم  سے اب بڑی تعداد میں طلبا جڑنے لگے ہیں ۔ ادارے میں اتنی بڑی تعداد میں طلبا نے درخواست دی  ہے کہ ادارے کے پاس ان کو بیٹھانے کی جگہ بھی نہیں ہے۔ منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ مدھیہ پردیش کا سب سے بڑا پرائیوٹ آئی ٹی آئی ہے ۔ اس ادارہ کا قیام 1982 میں مدھیہ پردیش مسلم ویلفیر سوسائٹی کی کوششوں سےعمل میں آیا تھا۔ ادارے کے ذریعہ بارہ ٹریڈ میں طلبا کو تعلیم دی جاتی ہے۔  لیکن اس کے ساتھ ہی کمپیوٹر کی تعلیم کی بڑھتی ڈیمانڈ کو دیکھتے ہوئے ادارے کے منتظمین نے غریب و نادار طلبا کو مفت کمپیوٹر تعلیم دینے کا سلسلہ شروع کیا ہے تاکہ یہ طلبا مفت کمپیوٹر کی تعلیم حاصل کر کے اپنے خواب کو پورا کر سکیں ۔ ادارے نے تین ماہ قبل جب یہ اعلان کیا تھا تب اسے محض چالیس درخواستیں ملی تھیں لیکن جب اس کی افادیت لوگوں تک پہنچی تو اب ادارے کے پاس اتنی درخواستیں آچکی ہیں کہ اس کے پاس  داخلے کے لئے جگہ نہیں ہے۔

منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ کے ذریعہ تین ماہ قبل جو مفت کمپیوٹر کورس شروع کیا گیا تھا اس کے پہلے بیچ کا امتحان لیا گیا اور چالیس بچوں میں سے سینتس بچوں نے امتحان میں کامیابی حاصل کی ۔ کامیاب طلبا کو ادارے کے زیر اہتمام منعقدہ تقریب میں سرٹیفیکٹ سے نوازا گیا۔ مفت کمپیوٹر تعلیم حاصل کرنے والے طلبا میں بلا لحاظ قوم وملت سبھی قوموں کے طلبا شامل ہیں۔ مفت کمپیوٹر تعلیم میں پہلے چالیس بچوں کا بیچ شروع کیا گیا تھا لیکن طلبا کی بڑھتی تعداد کو دیکھتے ہوئے اب اس میں پچاس طلبا کا داخلہ لیا گیا ہے۔ اس کے بعد بھی  ایسے طلبا کی ایک بڑی تعداد ہے جو داخلے کی متمنی ہے۔ ادارے میں جلد ہی کچھ اور سیٹیں بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ طلبا کو کمپیوٹر کی تعلیم سے آراستہ کیا جا سکے۔

منشی حسین خان ٹیکنکل انسٹی ٹیوٹ کے ذریعہ شروع کی گئی مفت کمپیوٹر کی تعلیم

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز