جھارکھنڈ : سرکاری اسپتال کی بے حسی ، باپ مردہ بیٹے کی لاش کندھے پر ڈھونے کیلئے مجبور

Aug 06, 2017 09:04 PM IST | Updated on: Aug 06, 2017 09:04 PM IST

رانچی: سرکاری اسپتالوں کے حکام کی سرد مہری اور سرکاری ڈاکٹروں کی بے حسی کا ایک تازہ واقعہ بی جے پی کے زیر اقتدار ریاست جھارکھنڈ میں سامنے آیا ہے ، جہاں ضلع گملا کے صدر اسپتال میں ڈاکٹروں کی طرف سے ایمبولینس فراہم نہیں کرنے پر ایک باپ کو اپنے جواں سال مردہ بیٹے کی لاش اپنے کندھے پر ڈھونے کو مجبورہونا پڑا۔

اطلاعات کے مطابق جھارکھنڈ میں ضلع گملا کے صدر اسپتال میں علاج کے دوران دواؤں کے فقدان کے سبب بیٹے کی موت ہوجانے کے بعد اس کے باپ نے لاش کو کندھے پر اٹھا کر گھر لے گیا۔ بچے کو علاج کے لئے کل ہی اس کے والدین صدر اسپتال لے آئے تھے، لیکن اس کو بچایا نہ جاسکا ۔ اس کے بعد والدین نے اسپتال سے ایمبولینس فراہم کرنے کی درخواست کی ، لیکن ان کی درخواست پر ایمبولینس بھی فراہم نہیں کیا گیا ، تو باپ کو اپنے مردہ بیٹے کی لاش پورے راستے اپنے کندھے پر ڈھوکر گھر لے جانا پڑا، جبکہ ان کے پیچھے اس کی ماں روتی ہوئی پید ل چل رہی تھی۔

جھارکھنڈ : سرکاری اسپتال کی بے حسی ، باپ مردہ بیٹے کی لاش کندھے پر ڈھونے کیلئے مجبور

مہلوک بچہ باسیا علاقہ کے ممرالہ اسکول میں درجہ ایک کا طالب علم تھا۔ پیسے نہ ہونے کی وجہ سے والدین ایک آٹو رکشہ بھی نہ لے، جبکہ گملا کے صدر اسپتال میں 10 ایمبولینس دستیاب تھے۔

ذرائع کے مطابق بچے کو جمعرات کے روز سیسائی علاقائی اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا، جہاں سے بہتر علاج کے لئے اس کو صدر اسپتال منتقل کردیا گیا تھا۔ گزشتہ روز جب اس کو صدر اسپتال لایا گیا، تو ڈاکٹروں نے بتایا کہ اس کو ملیریا ہوگیا ہے۔ جس کے بعد ڈاکٹروں نے جانچ کے بعد کچھ دوائيں تجویز کیں جو اسپتال میں دستیاب نہيں تھیں اور ان کے پاس پیسے نہ ہونے کے سبب وہ ان دواؤں کو باہر سے خرید بھی نہ سکے، جس کی وجہ سے بچےکی کل شام کو ہی موت ہوگئی اور شام کو ہی باپ مردہ بیٹے کی لاش کو کندھے پر ڈھو کر گھر لے گئے۔

دریں اثناء، گملا کے ضلع کلیکٹر شرون سائے آج صدر اسپتال پہنچے اور انہوں نے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے حکام کو ضروری ہدایات دینے کے ساتھ ہی سول سرجن کو اسپتال میں تمام ضروری دواؤں کی دستیابی یقینی بنانے اور مریضوں کو یقینی طورپر ایمبولینس فراہم کرنے کو کہا۔

دوسری جانب، وزیر اعلی رگھوور داس نے اس واقعہ میں غم و افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ضلع انتظامیہ کو واقعہ کی جانچ کرکے 24 گھنٹے کے اندر رپورٹ پیش کرنے اور قصوروار اہلکاروں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا حکم دیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز