لمکا بک آف ورلڈ ریکارڈ میں نام درج کرانے کے باوجود عبدالصمد کو نہیں ملی نوکری

Mar 15, 2017 05:17 PM IST | Updated on: Mar 15, 2017 05:17 PM IST

بھوپال۔  کہتے ہے کہ اوپر والا جس انسان کے ساتھ کوئی کمی رکھتا ہے  تو اسے دوسری طرف اتنی طاقت دے دیتا ہے کہ وہ دنیا بھر میں ایک مثال پیدا کر سکتا ہے ۔  ایک ہاکی کلاڑی جو مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال کی زمین سے اٹھا  تو اتنے ریکارڈ بنا  ڈالے کہ سب کو چونکا ڈالا۔ بھوپال کی زمین سے نکلے مد ھیہ پردیش  کے جس نایاب ہیرے کی چمک اب دنیا دیکھ رہی ہے، اس چمچماتے نگینے کا  نام ہےعبدالصمد ۔  اس کے پورے  گھر کے مرد نیشنل ہاکی کے کھیل سے جڑے ہوئے ہیں۔ وہیں عبدالصمد نے اپنی جسمانی کمزوری کو شکست دے کر جس طرح سے کامیابی کی منزل کو پار کیا ہے، اس کی محنت  آج دینا میں اپنا پرچم لہرا رہی ہے ۔ در اصل عبدالصمد کی ہاکی دس سال کی عمر سے شروع ہوتی ہے جب وہ اپنے والد کو ہاکی کھیلتے دیکھتا تھا اور ہاکی کھیلنے کی کوشش کرتا تھا ۔ لیکن اس کی  بولنے اور سننے کی کمی اسے آگے بڑھنے سے روکتی تھی ۔ پر عبدالصمد کی محنت رنگ لائی اور اسے ہاکی کھیلنے کا موقع ملا ۔ کیوں کہ وہ سن اور بول نہیں سکتا اس لیے اسے گول کیپر بنایا گیا اور یہاں سے شروع ہوا اس کی کامیابی کا سفر اور اس سفر میں سب سے پہلے اپنا نام لمکا بک آف ورڈ ریکارڈ  میں شامل کیا ۔

عبدالصمد  انڈین ہاکی میں مدھیہ پردیش  ٹیم کا وہ چمکتا  نگینہ ہے، جس نے لمکا بک آف ورڈ ریکارڈ میں اپنی جگہ تو بنائی ہی اور نہ جانے کتنے انعامات سے نوازا گیا  ۔ بہترین گول کیپرعبدالصمد کو قدرت نے بولنے اور سننے کی طاقت تو نہیں دی ہے  پر وہ اپنے بھائی کی مدد سے اپنی بات کو  کہہ پاتا ہے، جو کی خود ایک نیشنل کھلا ڑی ہے ۔ لیکن عبدالصمد چاہے جتنی کوشش کر لے یا ریکارڈ بنا لے اس کی پریشانی جوں کی توں برقرار ہے کیوں کہ حکومت کی طرف سے سرکاری نوکری اور سرکاری سہولیات کے دعوے اور وعدے تو  بہت کیے گئے ۔لیکن ان پر عمل آج تک نہیں کیا جا سکا ہے ۔

لمکا بک آف ورلڈ ریکارڈ میں نام درج کرانے کے باوجود عبدالصمد کو نہیں ملی نوکری

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز