نکاح ہوتے ہی دولہے نے مانگی گاڑی ، دلہن نے رچالی دوسری شادی

Apr 27, 2017 11:26 PM IST | Updated on: Apr 27, 2017 11:26 PM IST

رانچی کے پٹھوريا میں واقع چندوے کی رہنے والی رخسانہ پروین نکاح کے فورا بعد لالچی دولہے کی ضد سے اتنی زیادہ ناراض ہو گئی کہ اس نے شادی  ہی ختم کردی ۔ اطلاعات کے مطابق دلشاد ہوٹل کے مالک بشيرالدين کی بیٹی رخسانہ پروین کی شادی تھی۔ دلہا ممتاز انصاری بڑے ہی شان کے ساتھ پھولوں سے سجی گاڑی میں باراتيوں کے ساتھ پہنچا اور رات میں نکاح کی رسم ادا کی گئی۔

لیکن شادی کے فورا بعد ہی دولہے نے جہیز میں ایک خاص گاڑی کا مطالبہ کر دیا۔ اس کی معلومات ہوتے ہی دلہن نے نکاح ختم کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ معاملہ یہیں ختم نہیں ہوا۔ دلہن کے لواحقین اور مقامی لوگوں نے دولہے کی اس حرکت سے ناراض ہو کر دولہے اور باراتيوں کو یرغمال بھی بنا لیا۔ پھر ان سے شادی کے خرچ دینے کا مطالبہ کرنے لگے۔ علاوہ ازیں دولہے کے گلے میں جوتوں کی مالا اور میں جہیز کا لالچی ہوں لکھی تختی لٹکا دی۔

نکاح ہوتے ہی دولہے نے مانگی گاڑی ، دلہن نے رچالی دوسری شادی

آخر کار پنچایت نے معاوضے کی رقم ادا کرنے کے بعد دونوں فریق کے درمیان معاہدہ کراکر معاملے کو حل کرلیا ۔ اگرچہ شادی تو ٹوٹ ہی گئی۔ لیکن پھر رخسانہ کہ قسمت کھلی اور اگلے دن ہی پھٹكل ٹولی کے رہائشی محمد الیاس کے ساتھ رخسانہ پروین کی شادی کرا دی گئی ۔ لڑکی کے کنبہ کی ایک رکن اسما خاتون نے کہا کہ لڑکی کی شادی پھٹكل ٹولی میں کرا دی گئی ہے اور وہ بہت خوش ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز