بہار کے بعد جھارکھنڈ کا کارنامہ ، 66 اسکول اور کالجوں میں ایک بھی طالب علم کے نہیں ہوئے پاس

Jun 01, 2017 09:22 PM IST | Updated on: Jun 01, 2017 09:22 PM IST

رانچی : جھارکھنڈ میں اس سال 10 ویں اور 12 ویں کے نتائج کافی خراب آئے ہیں۔ ریاست کے 66 اسکولوں اور انٹرمیڈیٹ کالجوں کے ایک بھی طالب علم امتحان پاس نہیں کر پائے۔ 10 ویں اور 12 ویں کلاس کے امتحان کے نتائج 30 مئی کو جاری کئے گئے تھے۔

جھارکھنڈ اکیڈمی کونسل (جےاےسي) کے مطابق 10 ویں میں 57.9 فیصد، انٹرمیڈیٹ سائنس کے 52.36 فیصد اور انٹر کامرس کے 60.09 فیصد طالب علم امتحان میں پاس ہوئے۔ محکمہ تعلیم کے ذرائع کے مطابق 33 انٹرمیڈیٹ کالج اور اتنی ہی تعداد میں ہائی اسکولوں کا ایک بھی طالب علم امتحان میں پاس نہیں ہو پایا۔

بہار کے بعد جھارکھنڈ کا کارنامہ ، 66 اسکول اور کالجوں میں ایک بھی طالب علم کے نہیں ہوئے پاس

(Demo pic)

ان 33 انٹرمیڈیٹ کالجوں میں کل 148 طالب علم 12 ویں کلاس کے امتحان میں شریک ہوئے تھے ۔ وہیں اسکولوں کے 240 طلبہ 10 ویں کلاس کے امتحان میں شریک ہوئے تھے، لیکن ایک بھی طالب علم پاس نہیں ہوا۔ اساتذہ اور نیشنل ایجوکیشن یونین نے خراب نتائج کے لئے تکنیکی وجوہات کا حوالہ دیا ہے۔

نیشنل ایجوکیشن یونین کے سکریٹری جنرل امرناتھ جھا نے کہا کہ 10 ویں کلاس کے طلبہ بڑی تعداد میں انگریزی کے امتحان میں فیل ہو گئے۔ جھارکھنڈ اکیڈمی کونسل کی بندوبست کا خیال نہیں رکھا گیا۔ٹیچر یونین کے ارکان نے بدھ کو جے اے سي کے صدر اروند پرساد سنگھ سے ملاقات کی اور اس مسئلہ کی معلومات انہیں دی تھی۔ صدر نے اس معاملہ پر غور کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز