اپنے نام سے پریشان ہے صدام ، 40 جگہ درخواست کرنے پر بھی نہیں ملی نوکری ، اب کھٹکھٹایا عدالت کا دروازہ

Mar 19, 2017 05:31 PM IST | Updated on: Mar 19, 2017 05:31 PM IST

رانچی : اس کے دادا نے خوش ہوکر اس کا نام صدام حسین رکھا۔ ان کو امید تھی کہ وہ ایک دن وہ بڑا آدمی بنے گا اور کنبہ کا نام روشن کرے گا ، لیکن آج صورت حال بالکل برعکس ہے۔ صدام کام کے لئے در در بھٹك رہا ہے ، لیکن ہر جگہ سے اسے مایوسی ہی مل رہی ہے۔ آخرکار اس نے ان حالات سے بچنے کیلئے اب عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔

جھارکھنڈ کے اس نوجوان کی 40 مرتبہ نوکری کی عرضی مسترد کی جاچکی ہے۔ عراق کے سابق صدر صدام حسین سے مماثل نام کی وجہ سے اسے کوئی بھی کام دینے کیلئے تیار نہیں ہے۔ صدام جمشید پورکا رہنے والا ہےاور اس نے تمل ناڈو کی نور الاسلام یونیورسٹی سے میرین انجینئرنگ کررکھی ہے۔ صدام کے تمام ساتھی نوکری پانے میں کامیاب ہوچکے ہیں ، لیکن صدام کو اب تک نوکری نہیں ملی ہے۔

اپنے نام سے پریشان ہے صدام ، 40 جگہ درخواست کرنے پر بھی نہیں ملی نوکری ، اب کھٹکھٹایا عدالت کا دروازہ

انگریزی اخبار ہندوستان ٹائمس کی ایک رپورٹ کے مطابق صدام کا کہنا ہے کہ اس میدان میں موجود کمپنیاں ان کے نام کی وجہ سے انہیں پہلی مرتبہ میں ہی مسترد کر دیتی ہیں۔ اس کی اطلاع خود ااس کو اس وقت ہوئی جب معلوم کرنے پر ان کو بتایا گیا کہ ان کے نام کی وجہ سے انہیں نوکردی نہیں دی گئی۔ سال 2014 سے ہی وہ نوکری کی تلاش میں ہے ۔ صدام کا کہنا ہے کہ کمپنیاں انہیں نوکری دینے میں گھبراتی ہیں۔

دہلی میں واقع ٹيم ليج سروس کے ایک بھرتی صلاح کار بھی سے اتفاق کرتے ہوئے نظر آتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے اگر کسی شخص کی کام میں اکثر بیرون ملک سفر کیا جاتا ہو ، تو یہ ضروری ہے کہ اس کی تمام معلومات صحیح ہو۔ اس نے سوالیہ انداز میں کہا کہ شاہ رخ خان کو امریکہ کے ہوائی اڈے پر حراست میں لیا گیا، اس کے مقابلہ میں صدام کیا ہے؟

رپورٹ کے مطام اب صدام نے اس سے بچنے کے لئے اپنا نام بدل کر ساجد کر لیا ہے ، لیکن اس کے بعد بھی ان کا مسئلہ جوں کا توں ہے۔ اس کی وجہ کہ وہ جہاں کہیں نوکری کے لئے جاتا ہے، وہاں پر اس کے ڈاکومنٹ پر موجود صدام حسین اس کے لئے دشواریاں پیدا کر دیتاہے۔ تاہم دستاویزات پر موجود نام کو بھی تبدیل کرنے کے لئے صدام نے کافی کوششیں کیں اور سی بی ایس ای سے یونیورسٹی تک کے چکر کاٹے، لیکن کچھ بھی حاصل نہیں ہوا۔

اب آخر میں صدام نے جھارکھنڈ کی ایک عدالت میں اپنا نام بدلوانے کے لئے درخواست دائر کی ہے۔ تاہم اپنے نئے نام سے وہ ووٹر شناختی کارڈ، پاسپورٹ اور لائسنس بنوا چکا ہے، لیکن سرٹیفکیٹ میں موجود پرانا نام اب بھی اس کے لئے پریشانی کا سبب بنا ہوا ہے۔ کورٹ نے صدام کی درخواست پر سماعت کے لئے 5 مئی کی تاریخ مقرر کی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز