مدھیہ پردیش : بی جے پی ممبر اسمبلی کا متنازع بیان ، لڑکیوں کی شادی میں تاخیر کی وجہ سے ہوتا ہے لو جہاد

انہوں نے کہا کہ حکومت نے جب سے 18 سال کا قانون بنایا ہے تبھی سے لڑکیاں بھاگ کر شادی کرنے لگی ہیں اور اس لئے لو جہاد شروع ہوگیا ہے۔

May 06, 2018 08:53 AM IST | Updated on: May 06, 2018 08:53 AM IST

بھوپال : مدھیہ پردیش کے آگر مالوا سے بی جے پی کے ممبر اسمبلی گوپال پرمار نے متنازع بیان دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے جب سے 18 سال کا قانون بنایا ہے تبھی سے لڑکیاں بھاگ کر شادی کرنے لگی ہیں اور اس لئے لو جہاد شروع ہوگیا ہے۔

گوپال پرمار نے کہا کہ پہلے سماج میں جو بھی شادی ہوتی تھی ، ہمارے بڑے بزرگ ہی رشتہ جوڑ تے تھے ،خواہ وہ بچپن میں ہی جوڑلیتے تھے ، وہ رشتہ زیادہ دیر تک قائم رہتا تھا اور زیادہ مضبوط بھی تھا ، لیکن جب سے 18 سال کا مرض حکومت نے پھیلا ہے ، تب سے کافی ساری لڑکیاں بھاگنے لگ گئی ہیں۔ اس وجہ سے ہی لو جہاد کا بخار پھیلنے لگا ہے ۔ ہم گھر میں توجہ ہی نہیں دے رہے ہیں کہ ہماری لڑکیاں کیا کررہی ہیں۔ ہمیں کہہ کر جارہی ہیں کہ پڑھنے کیلئے کوچنگ کلاس جارہی ہوں ، لیکن وہ کسی بھی لڑکے ساتھ بھاگ جاتی ہیں۔

مدھیہ پردیش : بی جے پی ممبر اسمبلی کا متنازع بیان ، لڑکیوں کی شادی میں تاخیر کی وجہ سے ہوتا ہے لو جہاد

بی جے پی ممبر اسمبلی گوپال پرمار

انہوں نے کہا میں سب ماوں اور بہنوں سے اپیل کرتا ہوں کہ یہ جو لو جہاد کا بخار آیا ہے ، اس کے تئیں محتاط رہنے کا کام ہم سب کا ہے۔ خیال رہے کہ آگر اسمبلی حلقہ سے ممبر اسمبلی گوپال پرمار پہلے بھی اپنے بیانات کی وجہ سے سرخیوں میں رہ چکے ہیں۔ اپنی بدزبانی اور دلت آندولن کے دوران جبرا دکانیں بند کرانے کا معاملہ ہو یا ممبر پارلیمنٹ کے ساتھ گالی گلوچ کا ، ممبر اسمبلی پرمار اپنی بدزبانی کی وجہ سے سرخیوں میں رہے ہیں۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز