دلت لفظ کے استعمال پر مدھیہ پردیش ہائی کورٹ نے لگائی روک

مدھیہ پردیش ہائی کورٹ کی گوالیار بینچ نے ایک مفاد عامہ کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے دلت لفظ کے استعمال پر روک لگانے کا حکم جاری کیا ہے۔

Jan 22, 2018 07:40 PM IST | Updated on: Jan 22, 2018 07:40 PM IST

گوالیار : مدھیہ پردیش ہائی کورٹ کی گوالیار بینچ نے ایک مفاد عامہ کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے دلت لفظ کے استعمال پر روک لگانے کا حکم جاری کیا ہے۔ در اصل ڈاکٹر موہن لال ماہور نے دلت لفظ پر اعتراض کرتے ہوئے ہائی کورٹ میں مفاد عامہ کی ایک عرضی داخل کی تھی ، جس میں کہا گیا تھا کہ آئین میں اس لفظ کا کوئی تذکرہ نہیں ہے۔

عرضی میں مزید کہا گیا تھا کہ اس طبقہ سے وابستہ لوگوں کو درج فہرست ذات اور قبائل کے طور پر ہی مخاطب کیا گیا ہے ، ایسے میں سرکاری دستاویزات اور دیگر جگہوں پر دلت لفظ کا استعمال آئین کے خلاف کیا جارہا ہے۔

دلت لفظ کے استعمال پر مدھیہ پردیش ہائی کورٹ نے لگائی روک

ہائی کورٹ نے عرضی پر سماعت کرتے ہوئے حکم دیا کہ دلت لفظ کا استعمال کسی بھی سرکاری اور غیر سرکاری محکموں میں نہیں کیا جائے گا ۔ اس کیلئے آئین میں بتائے گئے لفظ ہی استعمال کئے جائیں گے ۔ عرضی گزار کے وکیل ابھیشیک پاراشر کے مطابق یہ حکم پورے مدھیہ پردیش میں نافذ ہوگا۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز