مدھیہ پردیش : سادھو سنتوں کو وزیر مملکت کا درجہ دینے کا معاملہ پہنچا ہائی کورٹ ، آئینی حیثیت کو چیلنج

Apr 04, 2018 09:13 PM IST | Updated on: Apr 04, 2018 09:13 PM IST

بھوپال : مدھیہ پردیش حکومت کے ذریعہ سادھو سنتوں کو وزیر مملکت کا درجہ دئے جانے کا معاملہ اب عدالت تک پہنچ گیا ہے ۔ حکومت کے اس فیصلہ کے خلاف ہائی کورٹ کی اندور بینچ میں عرضی داخل کی گئی ہے۔ اندور میں مقامی صحافی رام بہادر ورما کی طرف یہ عرضی داخل کی گئی ہے۔

عرضی میں اس بات کا حوالہ دیا گیا ہے کہ سنتوں کو وزیر مملکت کا درجہ دئے جانے کی آئینی حیثیت کیا ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ اس بات کا بھی تذکرہ کیا گیا ہےکہ کیا یہ سبھی اس عہدہ کے اہل ہیں۔ اس کے علاوہ وزیر مملکت کا درجہ دئے جانے والے پانچ سنتوں میں سے دو کے شیوراج حکومت کے خلاف آندولن چلانے کا بھی تذکرہ عرضی میں کیا گیا ہے ۔ وکیل گوتم گپتا نے کہا ہے کہ حکومت کا یہ قدم مخالفت کو دبانے کے مترادف ہے۔

مدھیہ پردیش : سادھو سنتوں کو وزیر مملکت کا درجہ دینے کا معاملہ پہنچا ہائی کورٹ ، آئینی حیثیت کو چیلنج

شیوراج سنگھ چوہان ۔فوٹو : نیوز 18 ۔

وہیں مدھیہ پردیش کے ہر شہری پر تقریبا 13 ہزار 800 روپے کے قرض کا حوالہ دیتے ہوئے عرضی میں کہا گیا ہے کہ حکومت کے نئے فیصلہ کا بوجھ بھی عام ٹیکس دہندگان پر ہی پڑے گا۔

خیال رہے کہ گزشتہ سال تقریبا 6 کروڑ پودے لگانے کے دعوی کو مہا گھوٹالہ قرار دیتے ہوئے نرمدا رتھ یاترا نکالنے کا اعلان کرنے والے پانچ باباوں کو مدھیہ پردیش کی شیوراج حکومت نے وزیر مملکت کے درجہ سے نوازا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز