مدھیہ پردیش ضمنی انتخابات : بی جے پی کو بڑا جھٹکا ، کولارس اور مونگاولی سیٹوں پر لہرایا کانگریس کا پرچم

مدھیہ پردیش کے شیوپوري ضلع کے كولارس اور اشوك نگر ضلع کے مونگاؤلي اسمبلی کے ضمنی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی صبح 8 بجے سخت سیکورٹی انتظامات کے درمیان شروع ہو گئی۔

Feb 28, 2018 10:04 AM IST | Updated on: Feb 28, 2018 09:42 PM IST

بھوپال : مدھیہ پردیش میں دو اسمبلی سیٹوں پر ہوئے ضمنی انتخابات میں کانگریس نے فتح کا پرچم بلند کیا ہے ۔ شیوپوري ضلع کے كولارس اور اشوك نگر ضلع کے مونگاؤلي اسمبلی میں ہوئے ضمنی انتخابات کانگریس نے جیت حاصل کی ہے ۔ جہاں مونگاولی میں کانگریس امیدوار نے بی جے پی امیدوار کو دو ہزار سے زائد ووٹوں سے شکست دی وہیں کولارس میں بھی کانگریس امیدوار نے بی جے پی کو تقریبا آٹھ ہزار ووٹوں سے شکست دی ہے ۔

اشوک نگر ضلع کی مونگاولی اسمبلی سیٹ پر کانٹے کی ٹکر کے بعد آخر کا ر کانگریس کے امیدوار برجیندر یادو نے بی جے پی امیدوار بائی صاحب یادو کو 2124 ووٹوں سے شکست دی ۔ کانگریس امیدوار کو 70808 ووٹ ملے جبکہ بی جے پی امیدوار کو 68684 ووٹ ملے۔ جبکہ کولارس میں کانگریس کے امیدوار مہندر سنگھ یادو نے بی جے پی امیدوار دیویندر جین کو تقریبا 8 ہزار ووٹوں سے ہرایا۔

مدھیہ پردیش ضمنی انتخابات : بی جے پی کو بڑا جھٹکا ، کولارس اور مونگاولی سیٹوں پر لہرایا کانگریس کا پرچم

كولارس میں ووٹوں کی گنتی سرکاری آئی ٹی آئی کالج ہوئی جبکہ مونگاؤلي کے ووٹوں کی گنتی اشوك نگر واقع گورنمنٹ نہرو ڈگری کالج میں ہوئی ۔ سب سے پہلے ڈاک ووٹوں کی گنتی شروع کی گئی اور اس کے بعد ای وی ایم کی گنتی شروع ہوگئی ۔ گنتی کی ویڈیوگرافی بھی کروائی گئی ۔ووٹوں کی گنتی کے مقام پر سیکورٹی کے سہ سطحی انتظامات کئے گئےتھے ۔دونوں مقام پر مرکزی مسلح پولیس فورس (سي اےپي ایف) کی ایک ایک کمپنی اور مقامی پولیس فورس کوتعینات کیا گیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز