مودی حکومت مسلم پرسنل لاء پر حملہ کر رہی ہے : مسلم پرسنل بورڈ ، تین طلاق پر کمیٹی بنانے کا فیصلہ

Sep 11, 2017 01:15 AM IST | Updated on: Sep 11, 2017 01:19 AM IST

بھوپال، : آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ نے آج الزام لگاتے ہوئے کہاکہ مرکز کی موجودہ حکومت مسلم پرسنل لاء پر حملہ کرنے کی کوشش کر رہی ہے جسے برداشت نہیں کیا جائے گا۔ دن بھر چلنے والی میٹنگ کے بعد ورکنگ کمیٹی کے رکن کمال فاروقی نے رات میں نامہ نگاروں سے کہاکہ حکومت کی جانب سے سپریم کورٹ کے سامنے تین طلاق سے متعلق معاملے میں کہا گیا ہے کہ ایسے تمام معاملے غیرآئینی قرار دیئے جائیں، جن میں عدالت کی مداخلت کے بغیر شادیاں توڑی گئی ہیں۔

انہوں نے کہاکہ بورڈ نے اس پر ناراضی کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ یہ مسلم پرسنل لاء پر حملہ ہے۔ مسٹر فاروقی نے کہاکہ بورڈ نے ایک کمیٹی بنانے کا فیصلہ بھی کیا ہے جو تین طلاق سے متعلق سپریم کورٹ کے فیصلے کا مطالعہ کرے گی۔ یہ کمیٹی اسلامی عقائد کے مطابق سدھار سے متعلق مشورے بھی دے گی۔ مسٹر فاروقی نے بابری مسجد معاملے میں کسی کا نام لئے بغیر کہاکہ یہ جائداد سے متعلق معاملہ ہے اور اس کے فیصلے میں جلدبازی نہیں کی جانی چاہئے۔ کسی ایک کےکہنے پر کارروائی سے بچنا چاہے۔

مودی حکومت مسلم پرسنل لاء پر حملہ کر رہی ہے : مسلم پرسنل بورڈ ، تین طلاق پر کمیٹی بنانے کا فیصلہ

اس موقع پر بورڈ کی خاتون سیل کی کنوینر ڈاکٹر اسماء زہرہ نے کہاکہ طلاق سے متعلق کوئی معاملہ سامنے آئے تو یہ نہیں سمجھا جانا چاہئےکہ خواتین کا استحصال ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ صورتحال میں ابھی بھی بیشتر خواتین شریعت کے ساتھ ہیں۔  اس سے پہلےیہاں خانو گاؤں میں واقع ایک کالج کے احاطہ میں میٹنگ کا اختتام ہوا جس میں بورڈ کے 51 میں سے تقریباً 45 اراکین نے شرکت کی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز