رانچی میں اقلیتی بچوں کے تعلیمی حقوق کے موضوع پر یک روزہ ورکشاپ کا انعقاد

Feb 28, 2017 06:06 PM IST | Updated on: Feb 28, 2017 06:06 PM IST

رانچی۔ رانچی میں اقلیتی بچوں کے تعلیمی حقوق کے موضوع پر یک روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا ۔ نیشنل کمیشن فار پروٹیکشن آف چائلڈ رائٹس اور ریاستی کمیشن فار پروٹیکشن آف چائلڈ رائٹس کے اشتراک سے منعقد اس ورکشاپ میں مسلم بچوں کے تعلیمی حالات پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ اس ایک روزہ ورکشاپ میں دانشوران ،علما کرام اور سماجی کارکنان نے ریاست کی مسلم اقلیتی آبادی کی تعلیمی پسماندگی کو دور کرنے کے تعلق سے اپنے تاثرات کا اظہار کیا۔  ساتھ ہی مسلم اقلیتی تعلیمی اداروں کے تئیں حکومت کے رویہ پر افسوس ظاہرکیا ۔

رائٹ ٹو ایجوکیشن قانون 2009 کے مطابق ملک کے تمام بچوں کو تعلیمی اداروں میں درجہ اول سے آٹھ تک مفت تعلیم حاصل کرنے کا حق حاصل ہے۔ مرکزی اور ریاستی حکومت پر چھ سے 14 سال کے بچوں کو لازمی طور پر تعلیم فراہم کرنے کی ذمہ داری ہے۔ اس مقصد کے تحت منعقد ورکشاپ میں ریاست کے اقلیتی بالخصوص مسلم بچوں کے تعلیمی حالات پر تبادلہ خیال کیا گیا تاکہ بچوں کو لازمی طور پر دینی تعلیم کے ساتھ ساتھ دنیاوی تعلیم کو یقینی بنایا جا سکے۔

رانچی میں اقلیتی بچوں کے تعلیمی حقوق کے موضوع پر یک روزہ ورکشاپ کا انعقاد

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز