کرناٹک "ہاتھ" سے نکلنے کے بعد راہل گاندھی نے کہا "پاکستان کے طرز پر کام کررہی ہے عدلیہ"۔

کرناٹک ہاتھ سے نکلنے کے بعد کانگریس صدر راہل گاندھی نے ایک قابل اعتراض تبصرہ کیا ہے۔ کانگریس صدر نے ہدنوستانی عدلیہ کا مذاق اڑاتے ہوئے اس کا موازنہ پاکستان کی عدلیہ سے کی۔

May 17, 2018 06:36 PM IST | Updated on: May 17, 2018 06:37 PM IST

رائے پور: کرناٹک ہاتھ سے نکلنے کے بعد کانگریس صدر راہل گاندھی نے ایک قابل اعتراض تبصرہ کیا ہے۔ کانگریس صدر نے ہدنوستانی عدلیہ کا مذاق اڑاتے ہوئے اس کا موازنہ پاکستان کی عدلیہ سے کی۔

دو دن کےچھتیس گڑھ کے دورہ پر رائے پور پہنچے راہل نے ایک ریلی کو خطاب کرتے ہوئے بی جے پی اور رآرا یس ایس پر تنقید کی۔ انہوں نے کہاکہ بی جے پی اور آرایس ایس ملک کے اداروں کو کمزور کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

کرناٹک

انہوں نے کہاکہ آرایس ایس ملک کے ہراداروں میں اپنا راستہ بنارہی ہے۔ ایسا پاکستان یا تاناشاہی میں ہوتا ہے۔ راہل گاندھی نے کہاکہ ملک کی تاریخ میں پہلی بار سپریم کورٹ کے چار ججوں کو عوام کے سامنے اپنی بات رکھنے کے لئے آنا پڑا۔

راہل گاندھی نے کہاکہ پریس کے ساتھ ہی بی جے پی ممبرپارلیمنٹ مودی سے خوفزدہ رہتے ہیں۔ راجدھانی رائے پور میں راجیوگاندھی پنچایتی راج سمیلن کو خطاب کرتے ہوئے راہل گاندھی نے کسانوں کی قرض معافی کے معاملے پر وزیر خزانہ ارون جیٹلی پر بھی تنقید کی۔ انہوں نے کہاکہ ملک کے آئینی اداروں کو مودی حکومت آرایس ایس کے لوگوں سے بھر رہی ہے، لیکن کانگریس کے دوراقتدار میں کبھی ایسا نہیں کیا گیا۔

رائے پور میں منعقدہ پروگرام میں ریاستی کانگریس صدر بھوپیش بگھیل، ریاستی انچارج پی ایل پونیا سمیت کئی کانگریسی لیڈر بھی موجود تھے۔  پروگرام میں آدیواسی لیڈر اروند نیتام بھی موجود ہیں، جو کانگریس کی رکنیت لے سکتے ہیں۔ اس پروگرام کے بعد راہل گاندھی سیتا پور، سرگجا سنبھاگ کے لئے روانہ ہوں گے۔ سیتا پور میں کسان آدیواسی سمیلن کا انعقاد ہوگا۔

سیتا پور کے بعد راہل گاندھی ہیلی کاپٹر سے بلاس پور ضلع کے مرواہی اسمبلی حلقہ کے تحت گرام کوٹمکلا پہنچیں گے، جہاں جنگل ستیہ گرہ آدیواسی ریلی ہوگی۔ اسی اسمبلی حلقہ میں آج سابق وزیراعلیٰ اجت جوگی بھی جلسہ کو خطاب کررہے ہیں، اس کو لے کر قیاس آرائیوں کا دور بھی شروع ہوگیاہے۔

 

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز