رانچی ہائی کورٹ نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا پر عائد پابندی کو کالعدم قرار دیا، مسلم دانشوروں نے کیا خیرمقدم

اسی سا ل چند ماہ قبل پاپولر فرنٹ آف انڈیا پر جھارکھنڈ کی بی جے پی حکومت نے بغیر وجہ بتائے پابندی عائد کردی تھی

Aug 27, 2018 08:49 PM IST | Updated on: Aug 27, 2018 08:49 PM IST

رانچی ہائی کورٹ نے آج اپنے ایک اہم فیصلہ میں معروف فلاحی تنظیم پاپولر فرنٹ آف انڈیا ( پی ایف آئی) پر عائد پابندی کو کالعدم قرار دے دیا ہے۔ ہائی کورٹ کے اس فیصلہ کا مسلم حلقوں میں خیرمقدم کیا جا رہا ہے۔ خیال رہے کہ اسی سا ل چند ماہ قبل پاپولر فرنٹ آف انڈیا پر جھارکھنڈ کی بی جے پی حکومت نے بغیر وجہ بتائے پابندی عائد کردی تھی۔ تاہم رانچی ہائی کورٹ میں حکومت پابندی کی وجہ بتانے اور تنظیم کے خلاف کسی بھی طرح کی غیر قانونی سرگرمی ثابت کرنے میں ناکام رہی جس کے بعد رانچی ہائی کورٹ نے صوبے میں پابندی کو کالعدم قراردے دیا ہے۔

آل انڈیا ملی کونسل کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر محمد منظور عالم نے  رانچی ہائی کورٹ کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ عدلیہ کا فیصلہ قابل ستائش اور حقائق پر مبنی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اقلیتوں ،دلتوں اور پسماندہ طبقات کو اس سے راحت ملی ہے ۔ اس فیصلہ سے بی جے پی حکومت کا حقیقی چہر ہ بھی بے نقاب ہوگیا ہے کہ وہ تعصب اور نفرت کی بنیاد پر ان لوگوں کو بھی روک رہی ہے جو اچھا کام کررہے ہیں ۔

رانچی ہائی کورٹ نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا پر عائد پابندی کو کالعدم قرار دیا، مسلم دانشوروں نے کیا خیرمقدم

بنگلورو میں پی ایف آئی کے نیشنل سکریٹری عبدالواحد سیٹھ

وہیں، بنگلورو میں پی ایف آئی کے نیشنل سکریٹری عبدالواحد سیٹھ نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ عدالت کاشکریہ ادا کرتے ہیں۔ ساتھ ہی جھارکھنڈ کے عوام اور پی ایف آئی کا ساتھ دینے والی تمام تنظیموں کا بھی شکریہ ادا کرتے ہیں۔ عبدالواحد سیٹھ نے کہا کہ جھارکھنڈ کی حکومت نے پی ایف آئی پر بے بنیاد الزامات عائد کرتے ہوئے عدالت میں پابندی کی عرضداشت داخل کی تھی۔ لیکن عدالت نے حکومت کی کوشش کو ناکام بنا دیا ہے۔

عبدالواحد سیٹھ نے کہا کہ پی ایف آئی سماج کے دبے کچلے طبقوں کے حقوق کیلئے لڑرہی ہے۔ لیکن فرقہ پرست طاقتیں اس تنظیم کو کمزور کرنے کی کوشش کرتی آ رہی ہیں۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز