رانچی میں کئی اسکول ہیں غیرمعیاری، گندے کپڑوں میں دیکھے گئے بیشتر بچے

رانچی۔ رانچی کے کئی سرکاری اسکولوں کے وجود پر سوال اٹھ رہے ہیں ۔ ان اسکولوں میں زیر تعلیم بچوں کے معیار بالکل تشویشناک ہیں۔

Dec 23, 2017 06:25 PM IST | Updated on: Dec 23, 2017 06:25 PM IST

 رانچی۔ رانچی کے کئی سرکاری اسکولوں کے وجود پر سوال اٹھ رہے ہیں ۔ ان اسکولوں میں زیر تعلیم بچوں کے معیار بالکل تشویشناک ہیں ۔ جب ای ٹی وی کی ٹیم نے ایسے ہی ایک اسکول کا دورہ کیا تو حیرت انگیز حقیقت سامنے آئی ۔ مرکزی اور ریاستی حکومت کے ذریعہ معاشرے سے پوری طرح ناخواندگی دور کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں ساتھ ہی سماجی کارکنان بھی اس سمت اپنی گراں قدرخدمات پیش کر رہے ہیں ۔ باوجود اس کے اس شعبہ میں مزید اقدامات کئے جانے کی ضرورت محسوس کی جا رہی ہے ۔

شہر کے کربلہ چوک کے قریب ایک ہی کیمپس میں دو اسکول قائم ہیں ۔ ایک  اردو مڈل اسکول ہے جبکہ دوسرا ہے ہندی مڈل اسکول ۔ جب ای ٹی وی کی ٹیم نے ان اسکولوں کا دورہ کیا توبیحد افسوسناک حالت دیکھنے کو ملی ۔ ان اسکولوں میں زیر تعلیم بیشتر بچے اسکول یونیفارم کے بجائے گندے کپڑوں میں نظر آئے ۔ حیرت تو تب ہوئی جب آٹھویں جماعت کے بچے آسان سے سوالوں کے جواب تک نہیں دے پائے ۔

رانچی میں کئی اسکول ہیں غیرمعیاری، گندے کپڑوں میں دیکھے گئے بیشتر بچے

ان اسکولوں میں زیر تعلیم بیشتر بچے اسکول یونیفارم کے بجائے گندے کپڑوں میں نظر آئے ۔

ان دونوں اسکولوں میں طلبا کی تعداد اساتذہ کی تعداد کےمقابلےکم ہے ۔ اردو اسکول میں دو سو طلبا کے لئے پانچ جبکہ ہندی اسکول میں ایک سو طلبا کے لئے آٹھ اساتذہ فائز ہیں۔ معیاری تعلیم کے سوال پر یہاں کےاساتذہ اپنا پلہ جھاڑ رہے ہیں۔ وہیں طلبا لیڈر اساتذہ کو مزید تربیت دینے پر زور دے رہے ہیں ۔ ان اسکولوں میں پابندی کے ساتھ مڈ ڈے میل کا انتظام ہے ۔ یہاں کا منظر دیکھنے سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ سرپرست اپنے بچوں کو صرف کھانے کے لئے اسکول بھیجتے ہیں ۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز