تین لڑکوں کی ہوس کا شکار بنی 6 سال کی بچی ، ملزموں میں بھائی بھی شامل

ملزموں کی عمر 12 سال اور 15 سال ہے۔ تینوں ملزم بی قبائلی کمینوٹی سے ہی ہیں۔ حیرانی کی بات ہے کہ ایک ملزم متاثرہ کا چچیرا بھائی ہے۔

Sep 27, 2018 08:40 PM IST | Updated on: Sep 27, 2018 08:46 PM IST

مدھیہ پردیش کے اندور میں ایک 6 سال کی بچی کے ساتھ اجتماعی عصمت دری کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ بچی کو قبائلی کمیونٹی کے حوالے کیا جا رہا ہے اور ملزم نابالغ ہیں۔ ایک ہفتے پرانے اس معاملے میں پولیس نے 3 طلبا کو حراست میں لے لیا ہے۔ جن میں سےایک بچی کا چچیرا بھائی شامل ہے۔ایڈیشنل سپرنٹنڈنٹ پولیس(اے ایس پی) ناگیندر سنگھ  نے جمعرات کو بتایا کہ سمرول تھانہ علاقہ کے دتودا گاؤں میں 3 لڑکوں نے 21 ستمبر کو اس واقعے کو مبینہ طور پر انجام دیا۔ ریپ کے بعد بچی کو دھمکی دی گئی کہ اگر اس نے کسی کو کچھ بتایا تو اس کے گھر والوں کو کافی پریشان کیا جائے گا۔

دھمکی کی وجہ سے بچی ڈر گئی اور اس نے کچھ دنوں تک کسی کو کچھ نہیں بتایا  لیکن درد بڑھنے کے بعد اس نے اپنی بہن کو بدھ کو یہ بتائی ۔ پولیس نے بتایا کہ تینوں ملزمان کے خلاف معاملہ درج کر لیا گیا ہے اور انہیں حراست میں لے لیا گیا ہے۔

تین لڑکوں کی ہوس کا شکار بنی 6 سال کی بچی ، ملزموں میں بھائی بھی شامل

علامتی تصویر

ملزموں کی عمر 12 سال اور 15 سال ہے۔ تینوں ملزم بی قبائلی کمینوٹی سے ہی ہیں۔ حیرانی کی بات ہے کہ ایک ملزم متاثرہ کا چچیرا بھائی ہے۔ پولیس افسر نے بتایا کہ بچی کا اندور میں علاج چل رہا ہے اور وہ خطرے سے باہر ہے۔

یہ بھیپڑھیں: مردوں کو عورتوں سے صرف سیکس چاہئے ، اس ذہنیت کو بڑھائیں گے سیکس روبوٹس

Loading...

ایس پی خاتون لیڈر کے ہوٹل میں چل رہا تھا سیکس ریکٹ ، قابل اعتراض حالت میں ملے لڑکے اور لڑکیاں

پرنسپل اور ٹیچر 9 مہینے تک کرتے رہے 5 ویں کلاس کی طالبہ کا ریپ، لیتے تھے سیلفیاں، حاملہ ہونے پر ہوا انکشاف

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز