سیاست میں حقیقت اور پالیسی کا فقدان ، نتیش کمار سے اب زیادہ توقع نہیں : میدھا پاٹکر

Aug 04, 2017 12:47 PM IST | Updated on: Aug 04, 2017 12:48 PM IST

دھار: گزشتہ آٹھ روز سے مدھیہ پردیش میں سردار سروور ڈیم کو لے کر ہڑتال کر رہیں نرمدا بچاؤ تحریک (این بی اے) کی لیڈر وممتاز سماجی کارکن میدھا پاٹکر نے بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی سے ہاتھ ملانے کی وجہ سے اب ان سے 'سردار سروور پروجیکٹ کے مسائل کو اٹھانے کی زیادہ امید نہیں بچی ہے۔

میدھا پاٹکر نے گزشتہ روز دھار ضلع کے چكھلدا میں اپنے ساتھیوں کے ساتھ بھوک ہڑتال کے آٹھویں دن صحافیوں سے بات چیت میں ایک سوال کے جواب میں کہا کہ مسٹر کمارنے وزیر اعظم مسٹر مودی سے ہاتھ ملا لیا ہے جس کی وجہ سے اب ان سے سردار سروور ڈیم سے متعلق مسائل کو اٹھائے جانے کی توقع نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ان کے پاس ہاتھ جوڑ کر اس کیلئے گزارش بھی نہیں کریں گی۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال 16 ستمبر کو نتیش کمار نے راج گھاٹ (بڑواني) آکر اپنی مکمل شراب بندی مہم کے تحت جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سردار سروور سے منسلک مسائل پر این بی اے کو تعاون دینے کا وعدہ کیا تھا۔ ان کے پاس سردار سروور سے منسلک تمام دستاویزات بھی ہیں۔

سیاست میں حقیقت اور پالیسی کا فقدان ، نتیش کمار سے اب زیادہ توقع نہیں : میدھا پاٹکر

محترمہ پاٹکر نے کہا کہ آج کل سیاست میں حقیقت اور پالیسی کا فقدان ہے جس کی وجہ سے وہ سیاسی جماعتوں کی بجائے عوامی تحریکوں کے ذریعے جدوجہد کرنے میں یقین کرتی ہیں۔ محترمہ پاٹکر نے الزام لگایا کہ مدھیہ پردیش حکومت کی طرف سے عدالتوں میں بے گھروں کی بازآبادکاری سے متعلق اعداد و شمار کے غیر حقیقی حلف نامے جمع کئے جانے کی وجہ سے ابھی تک ان کیلئے 900 کروڑ کا پیکج ہی دیا گیا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ ابھی تک الگ الگ کئے گئے اعلانات کا نفاذ بھی نہیں ہوا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز