مدھیہ پردیش میں قرض معافی کے لئے آندولن چلا رہے کسانوں پر فائرنگ، تین ہلاک

Jun 06, 2017 04:12 PM IST | Updated on: Jun 06, 2017 04:12 PM IST

بھوپال۔ مدھیہ پردیش میں کسانوں کا آندولن پرتشدد ہو گیا ہے۔ ریاست کے مندسور ضلع میں مظاہرہ کر رہے کسانوں پر پولیس نے فائرنگ کر دی، جس میں تین کسانوں کی گولی لگنے سے موت ہو گئی۔ معلومات کے مطابق، ضلع کے پپليا میں ہزاروں کسان سڑک پر اتر کر مظاہرہ کر رہے تھے۔ اس دوران کچھ ٹرکوں میں آگ لگانے کی کوشش بھی کی گئی۔ حالات پر قابو پانے کے لئے پولیس نے فائرنگ کر دی۔ بتایا جا رہا ہے کہ گولی لگنے سے پانچ کسان زخمی ہو گئے، جن میں سے تین کسانوں نے اسپتال میں علاج کے دوران دم توڑ دیا۔

تاہم، وزیر داخلہ بھوپندر سنگھ نے کسانوں کی پولیس فائرنگ میں موت کی تصدیق نہیں کی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ پورے واقعے کی تحقیقات کرائی جا رہی ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ حکومت کسانوں کے نام پر ہڑدنگ کر رہے مظاہرین سے سختی سے پیش آئے گی۔ ریاست میں قرض معافی اور اپنی فصل کے واجب دام کی مانگ کو لے کر کسانوں کی ہڑتال منگل کو چھٹے دن بھی جاری ہے۔ پیر کی رات مندسور ضلع میں کسانوں نے ریلوے كراسنگ گیٹ کو توڑنے کے ساتھ ٹریک اکھاڑنے کی کوشش کی۔ اس کے علاوہ ضلع میں انٹرنیٹ کی خدمات کو بند کر دیا گیا ہے۔

مدھیہ پردیش میں قرض معافی کے لئے آندولن چلا رہے کسانوں پر فائرنگ، تین ہلاک

مندسور کے پولس سپرنٹنڈنٹ او. پی ترپاٹھی نے بتایا کہ پیر کی رات کو دیر دالود پولیس چوکی کے علاقے میں کسانوں نے سڑکوں پر اترکر مظاہرہ کیا اور ریلوے کراسنگ کے گیٹ کو توڑ دیا۔ اس کے علاوہ انہوں نے پٹریوں کے بیچ سلیپر پر لگے لوہے کے اینگل کو نقصان پہنچایا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز