پہلے بیوی کا ہاتھ توڑا، پھر دے دیا تین طلاق، متاثرہ لگا رہی وزیر اعظم مودی سے انصاف کی گہار

تین طلاق بھلے ہی ہندوستانی قانون کے تحت غیر قانونی ہو گیا ہو لیکن اس کے باوجود مسلم سماج میں یہ اب بھی بر قرار ہے۔

Sep 05, 2018 01:02 PM IST | Updated on: Sep 05, 2018 01:31 PM IST

راجدھانی رانچی میں تین طلاق  کا ایک معاملہ سامنے آیا ہے۔ در اصل ایک خاتون کی زندگی تباہ کرنے کا یہ معاملہ کچھ اس طرح ہے کہ پہلے شوہر نے بیوی کو بے رحمی سے پیٹا اور پھر اس کا ہاتھ توڑ کر تین بار طلاق کہہ کر اسے چھوڑ دینے کا فرمان سنا دیا۔ اب یہ متاثرہ خاتون پولیس اسٹیشن سے لیکر وزیر اعظم مودی تک سے انصاف کی گہار لگا رہی ہے۔

بتا دیں کہ نازنین کے والد کا بھی کہنا ہے کہ انہوں نے جیسا نام ہے ویسے ہی بڑے نازوں سے اپنی بیٹی کو پالا پوسا۔ نازنین کا نکاح سجاد کے ساتھ کیا تھا لیکن اس نے ظلم کی انتہا ہی کر دی۔ اس لئے ایسے غصے والے شوہر کو سزا ملنی چاہئے۔

پہلے بیوی کا ہاتھ توڑا، پھر دے دیا تین طلاق، متاثرہ لگا رہی وزیر اعظم مودی سے انصاف کی گہار

تین طلاق متاثرہ

تین طلاق بھلے ہی ہندوستانی قانون کے تحت غیر قانونی ہو گیا ہو لیکن اس کے باوجود مسلم سماج میں یہ اب بھی بر قرار ہے ۔ تین طلاق کا خوف ناک چہرہ ایک بار پھر ملک کے سامنے آیا ہے۔

رانچی کے کانکے تھانہ علاقے میں نازنین پروین نامی خاتون کا الزام ہے کہ اس کے شوہر سجاد نے بڑے ہی بے رحمانہ طریقے سے اس کی پٹائی کی۔ بغیر کسی وجہ اور قصور کے  رات بھر ا س کو پیٹا ۔ اس کے بعد اس کا دل نہیں بھرا تو ہتھوڑا مار کر اس کا ہاتھ توڑ دیا اور ساتھ ہی  تین طلاق دیکر گھر سے نکال دیا۔

یہ بھی پڑھیں : تین طلاق کے بعد سسر کے ساتھ حلالہ، عدت میں شوہر نے کیا ریپ

یہ بھی پڑھیں : شوہر غیر مردوں سے ہمبستر ہونے کا بناتا تھا دباؤ ، بیوی کے انکار کرنے پر دیا طلاق

یہ بھی پڑھیں: بیٹی کی شادی کرنے کی بات کی تو شوہر نے مار پیٹ کرکے بیوی کو دیدیا تین طلاق

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز