مدھیہ پردیش کے ضلع ہردہ کا واحد سرکاری اردو اسکول خستہ حالت میں

Oct 03, 2017 08:00 PM IST | Updated on: Oct 03, 2017 08:00 PM IST

 بھوپال۔ مدھیہ پردیش کے ضلع ہردہ میں صرف ایک سرکاری اردو اسکول ہے ۔ پر یہ  اردو  اسکول مدھیہ پر دیش حکومت کی عدم توجہی کا شکار ہے۔ اس اسکول میں حکومت کی جانب سے ایسی کوئی  سہولت نہیں ہے جو ہردہ کے دوسرے اسکولوں میں ہیں ۔ ہردہ کے اس قدیم اردو اسکول  کی حالت جتنی خراب ہے تو اس سے اس اسکول میں تعلیم کس طرح کی دی جاتی ہوگی اس کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے ۔  جبکہ ہردہ مدھیہ پردیش کے وزیر تعلیم وجے شاہ کا ہوم ٹاؤن  ہے۔

  ہردہ کے املی پورہ علاقہ میں بنا گورمنٹ اردو پرائمری میڈل اسکول ضلع کا ایسا اسکول ہے جہاں پر اردو کے ساتھ ہندی بھی پڑھائی جاتی ہے۔ 1914 میں بنے اس اسکول کی چھت جگہ جگہ سے ٹوٹ رہی ہے۔  اس ٹوٹی چھت کے نیچے بیٹھ کر بچے پڑھائی کر رہے ہیں جو کسی بھی روز حادثے کا شکار ہو سکتے ہیں۔ اس کی شکایت حکومت  سے کی گئی پر کسی نے اس اسکول کی خبر آج تک نہیں لی ۔ گیارہ بجے اسکول لگنے کا وقت ہوتا ہے۔ ٹیچر اسکول کھولنے کے بعد خود جھاڑوں لگاتے ہیں ۔ کیو نکہ اس اسکول میں لمبے وقت سے کسی چپراسی کی تقرری نہیں کی گئی  جبکہ اس کا مطالبہ بار بار کیا جاتا رہا ہے ۔

مدھیہ پردیش کے ضلع ہردہ کا واحد سرکاری اردو اسکول خستہ حالت میں

 یہ اردو اسکول قومی ایکتا کی مثال ہے ۔ کیوں کہ اس اسکول میں مسلم طبقے کے ساتھ دوسرے طبقے کے بچے بھی تعلیم حاصل کر تے رہے ہیں لیکن آج اس اسکول کی اس خستہ حالی  کا ذمہ دار  سب حکومت کو مانتے ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز