چینی اخبار کا انتباہ، کشیدگی کم نہیں ہوئی تو ہندوستان کے ساتھ جنگ یقینی

Jul 03, 2017 04:31 PM IST | Updated on: Jul 03, 2017 04:31 PM IST

نئی دہلی۔ سکم سیکٹر میں سرحدی تنازعے کو لے کر ہندوستان اور چین کے درمیان چل رہی کشیدگی کے درمیان چینی ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ بیجنگ پوری عہد بستگی سے اپنی حفاظت کرے گا، پھر چاہے اسے جنگ ہی کیوں نہ کرنا پڑے۔ چینی اخبار گلوبل ٹائمز نے ماہرین کے حوالے سے لکھا ہے کہ حالات نہیں سدھرے تو دونوں ممالک کے درمیان جنگ شروع ہو سکتی ہے۔ ڈوكا لا علاقے میں تیسرے ہفتے بھی تعطل جاری رہنے کے درمیان چین کی سرکاری میڈیا اور تھنک ٹینکس نے کہا، "اگر ہندوستان اور چین کے درمیان تنازعہ کو مناسب طریقے سے حل نہیں کیا گیا تو جنگ ممکن ہے۔" دونوں ممالک کے درمیان یہ سب سے طویل کشیدگی ہے۔ جموں و کشمیر سے لے کر اروناچل پردیش تک چین کے ساتھ منسلک ہندوستان کی 3488 کلومیٹر طویل سرحد کا 220 کلومیٹر حصہ سکم سیکٹر میں پڑتا ہے۔

شنگھائی میونسپل سینٹر فار انٹرنیشنل اسٹڈیز میں پروفیسر وانگ دہوا نے کہا، "چین بھی 1962 سے بہت مختلف ہے۔" وہ وزیر دفاع ارون جیٹلی کے اس بیان پر رائے دے رہے تھے، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ 2017 کا ہندوستان 1962 سے بہت مختلف ہے۔ جیٹلی نے کہا تھا، "اگر وہ ہمیں یاد دلانا چاہتے ہیں تو 1962 کے حالات مختلف تھے اور 2017 کا ہندوستان مختلف ہے۔" وانگ کا کہنا ہے، " ہندوستان 1962 سے ہی چین کو اپنا سب سے بڑا حریف سمجھتا آ رہا ہے، کیونکہ دونوں ممالک میں بہت سی مماثلتیں ہیں۔ مثال کے طور پر دونوں ہی بہت بڑی آبادی والے ترقی پذیر ملک ہیں۔"

چینی اخبار کا انتباہ، کشیدگی کم نہیں ہوئی تو ہندوستان کے ساتھ جنگ یقینی

گلوبل ٹائمز کے مطابق، "اگر ہندوستان اور چین کے درمیان حالیہ تنازعہ مناسب طریقے سے نہیں حل کیا گیا تو جنگ کے حالات پیدا ہو سکتے ہیں، یہ کہتے ہوئے مبصرین نے خاکہ پیش کیا کہ چین کسی بھی صورت میں اپنی سرحد کی حفاظت کرے گا۔ " اخبار کا کہنا ہے، "1962 میں، چین نے ہندوستان کے ساتھ جنگ ​​کی تھی، کیونکہ وہ چین کی سرحد میں گھس آیا تھا۔ اس کے نتیجہ میں چین کے 722 اور ہندوستان کے 4383 فوجی مارے گئے تھے۔" اس نے کہا کہ ماہرین نے دونوں فریقوں سے بات چیت کے ذریعے تنازعہ کا حل نکالنے کو کہا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز