cricket ‏match indian cricketer whom world cup career is over snm بڑی خبر: سیمی فائنل میں ہار کے بعد ٹیم انڈیا کے ان کھلاڑیوں کا ورلڈ کپ کریئر ختم– News18 Urdu

بڑی خبر: سیمی فائنل میں ہار کے بعد ٹیم انڈیا کے ان کھلاڑیوں کا ورلڈ کپ کریئر ختم

ہندستانی ٹیم کو نیوزی لینڈ کے خلاف ورلڈ کپ 2019 کے سیمی فائنل مقابلے میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ اس کے ساتھ ہی کچھ ٹیم انڈیا کے کھلاڑیوں کا ورلڈ کپ کریئر بھی ختم ہوگیا۔۔

Jul 12, 2019 11:01 AM IST | Updated on: Jul 12, 2019 11:04 AM IST

ہندستانی ٹیم کو نیوزی لینڈ کے خلاف ورلڈ کپ 2019 کے سیمی فائنل مقابلے میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ اس کے ساتھ ہی کچھ ٹیم انڈیا کے کھلاڑیوں کا ورلڈ کپ کریئر بھی ختم ہوگیا۔۔نیوزی لیںڈ مینچیسٹر کے اولڈ ٹریفرڈ میں ہوا یہ مقابلہ 18 رن سے اپنے نام کیا۔ نیوزی لینڈ نے ٹیم انڈیا کے سانے 240 رن کا ہدف رکھا لیکن ٹیم انڈیا 49.3 اوور میں 221 رن ہی بنا سکی۔۔

ٹیم انڈیا کی ورلڈ کپ سے وداعی کے ساتھ ہی اب ہار کا پوسٹ مارٹم بھی شروع ہوگیاہے۔ کئی سیمی فائنل میں شکست کیلئے وراٹ کوہلی کے فیصلوں کو ذمہ دار ٹھہرا رہا ہے تو کوئی ٹیم میں دنیش کارتک کی جگہ کو لیکر بھی سوال اٹھا رہا ہے۔ ہار کی وجہ جو بھی ہو، ورلڈ کپ کے بعد ایک بات تو طے ہوگئی کہ کچھ کھلاڑی اب کبھی ہندستانی ٹیم کیلئے ورلڈ کپ کھیلتے نہیں نظر آئیں گے۔ ایسے ہوئے کچھ کھلاڑیوں پر ڈالتے ہیں جن کا اگلے ورلڈ کپ میں نہ کھیلنا یا ےو بے ہے یا اس بات کی پوری امید ہے

بڑی خبر: سیمی فائنل میں ہار کے بعد ٹیم انڈیا کے ان کھلاڑیوں کا ورلڈ کپ کریئر ختم

۔(1):۔۔ مہندر سنگھ دھونی: اپنی کپتانی میں ٹیم انڈیا کو دو ورلڈ کپ جتانے والے مہندر سنگھ دھونی کے سنیاس کو لیکر اٹکلوں کا بازار گرم ہے۔ 37 سال کے دھونی 2023 کا ورلڈ کپ نہیں کھیلیں گے۔ یہ بات تقریبا طے ہی ہے۔ بلکہ دوھنی اگر انگلینڈ سے لوٹ کر کچھ ہی دن میں سنیاس کا اعلان کردیتے ہیں تو بھی کسی کو حیران نہیں ہونا چاہئے۔ دھونی نے اپنے کریئر میں سب کچھ حاصل کر لیا ہے ایسے میں اب شاید صرف یہ دیکھنا باقی ہے کہ ٹیم انڈیا کے اس ہیرو کی وداعی کیسی ہوتی ہے۔

ورلڈ کپ 2019 میں مظاہرہ: 9 میچوں میں 273 رن ، سب سے زیادہ 56 بنام ویسٹ انڈیز۔۔

Loading...

ونڈے کریئر: 350 رن میچ، 10773 رن، 10 سنچریم سب سے زیادہ 183*,  اوسط 50.57۔۔

icc, cricket, icc cricket world cup, mahendra singh dhoni, kedar jadhav, shikhar dhawan, dinesh karthik, आईसीसी, क्रिकेट, आईसीसी क्रिकेट वर्ल्ड कप 2019, महेंद्र सिंह धोनी, केदार जाधव, शिखर धवन, दिनेश कार्तिक دنیش کارتک نے اس ورلڈ کپ میں 3 میچ کھیل کر 14 رن بنائے ہیں۔ (تصویر اے پی )۔

۔(2):۔۔ دنیش کارتک:۔ ٹیم انڈیا کے اس وکٹ کیپر بلے باز کی عمر 34 سال ہے اور اگلے ورلڈ کپ میں وہ 38 سال کی عمر کر جائیں گے۔ عمر و ریشبھ پنت اور نئے وکٹ کیپرو کی کھیپ دیکھتے ہوئے دنیش کارتک کی ٹیم میں جگہ مشکل ہے۔ ایسے میں دنیش  کارتک کا ورلڈ کپ کا کریئر یہیں ختم ہوگیا ہے۔ اس بات کی امید بیحد کم ہی ہےکہ وہ ٹیم انڈیا کے آئندہ مقابلوں میں بھی ٹیم میں شامل کئے جائیں۔

شیکھر دھون نے عالمی کپ 2019 میں آسٹریلیا کے خلاف سنچری لگائی لیکن وہ چوٹ کے چلتے دو میچ کھیل کر ہی ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئے۔ (فائل فوٹو)۔ شیکھر دھون نے عالمی کپ 2019 میں آسٹریلیا کے خلاف سنچری لگائی لیکن وہ چوٹ کے چلتے دو میچ کھیل کر ہی ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئے۔ (فائل فوٹو)۔

۔(3):۔۔ شیکھر دھون:۔۔ ہندستانی قدآوراوپنر شیکھر دھون نے موجودہ ورلڈ کپ میں صرف دو ہی میچ کھیلے۔ جنوبی افریقہ کے خلاف پہلے میچ میں انہوں نے 8 رن بنائے اور اس کے  بعد آسٹریلیا کے خلاف شاندار 117 رن بناکر ٹیم انڈیا کو جیت دلائی۔  اسی میچ میں ان کو چوٹ لگ گئی جس کےبعد وہ ورلڈ کپ سے باہر ہو گئے۔ دھون کی عمر 33 سال 218 دن ہیں۔ 2023 ورلڈ کپ تک وہ تقریبا 38 سال کی دہلیز پر کھڑے ہوں گے۔ ان کا کریئر چوٹوں سے متاثر رہا ہے۔ ایسے میں اس بات کا پورا اندیشہ ہے کہ 2023 ورلڈ کپ ٹیم میں دھون نہیں نظر آئیں گے۔۔

icc, cricket, icc cricket world cup, mahendra singh dhoni, kedar jadhav, shikhar dhawan, dinesh karthik, आईसीसी, क्रिकेट, आईसीसी क्रिकेट वर्ल्ड कप 2019, महेंद्र सिंह धोनी, केदार जाधव, शिखर धवन, दिनेश कार्तिक کیدار جادھو ورلڈ کپ ٹیم میں بطور آل راؤنڈر شامل کئے گئے تھے لیکن وہ اپنے مظاہرے کوئی چھاپ نہیں چھوڑ سکے۔ (تصویر اے پی ) ۔

۔(3)۔۔ کیدار جادھو:۔۔ ٹیم انڈیا کے اس بیٹنگ آل راؤنڈر کی عمر فی الحال 34 سال ہے۔ اگلے ورلڈ کپ تک وہ 38 سال کے ہو جائیں گے۔ ایسے میں اس بات میں کوئی شک نہیں کہ وہ اگلا ورلڈ کپ کھینے نہیں جا رہے ہیں۔ جادھو سے حالانکہ موجودہ ورلڈ کپ میں کافی امیدیں تھیں لیکن وہ ان پر پوری طرح کھرے  نہیں اتر سکے۔ جادھو کو 6 میچوں میں میدان میں اتارا گیا۔۔

ان کے کھینے پر بھی سوال

محمد سمیع: 2023 ورلڈ کپ تک محمد شمی 32 سال کے ہو جائیں گے۔ یہ عمر حالانکہ ایسی نیں ہے کہ وہ اگلا ورلڈ کپ نہ کھیل سکیں لیکن تیز گیند باز کیلئے فٹنیس بنائے رکھنا کافی مشکل ہوتا ہے۔

رویندر جڈیجا: اس لھلاڑی کو ٹیم میں ضرورت پڑنے پر ہی کھلایا جاتا ہے۔ ٹیم میں ہر فارمیٹ میں ان کی جگہ پکی نہیں ہے۔ ایسے میں اس بات کی امید کم ہی ہے کہ جڈیجا اگلا ورلڈ کپ کھیل سکیں۔ ان کی عمر ابھی 30 سال ہے اور اگلے ورلڈ کپ تک وہ 34 سال کے ہو جائیں گے۔۔

Loading...