انتہائی سنسنی خیز میچ میں نیوزی لینڈ کو پٹخنی دے کر پہلی مرتبہ انگلینڈ نے جیتا کرکٹ ورلڈ کپ کا خطاب– News18 Urdu

انتہائی سنسنی خیز میچ میں نیوزی لینڈ کو پٹخنی دے کر پہلی مرتبہ انگلینڈ نے جیتا کرکٹ ورلڈ کپ کا خطاب

لارڈس کے تاریخی میدان پر آئی سی سی کرکٹ ورلڈ کپ 2019 کا فائنل میچ نیوزی لینڈ اور میزبان انگلینڈ کے درمیان کھیلا گیا ۔

Jul 14, 2019 03:52 PM IST | Updated on: Jul 15, 2019 12:22 AM IST

لارڈس کے تاریخی میدان پر آئی سی سی کرکٹ ورلڈ کپ 2019 کا خطاب ایک دلچسپ مقابلہ کے بعد انگلینڈ نے جیت لیا ہے ۔ نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا اور سلامی بلے باز ہینری نکولس کی نصف سنچری کی بدولت مقررہ 50 اوورس میں 8 وکٹ کے نقصان پر 241 رن بنائے ہیں ، اس کے جواب میں انگلینڈ کی ٹیم بھی 50 اوورس میں 241 رن ہی بناسکی اور پھر میچ کا فیصلہ سپر اوور کے ذریعہ ہوا ۔

سپر اوور میں انگلینڈ نے پہلے بلے بازی کرتے ہوئے 15 رن بنائے ، جس کے جواب میں نیوزی لینڈ کی ٹیم بھی 15 رن ہی بناسکی ، جس کی وجہ سے میچ کے دوران سب سے زیادہ باونڈری لگانے کی وجہ سے انگلینڈ کو فاتح قرار دیا گیا ۔ انگلینڈ کی طرف سے سپر اوور میں جوس بٹلر نے سات اور بین اسٹوکس نے 8 رن بنائے ۔ نیوزی لینڈ کی طرف سے سپر اوور ٹرینٹ بولٹ نے پھینکا جبکہ انگلینڈ کی طرف سے جوفرا آرچر نے سپر اوور پھینکا ۔

انتہائی سنسنی خیز میچ میں نیوزی لینڈ کو پٹخنی دے کر پہلی مرتبہ انگلینڈ نے جیتا کرکٹ ورلڈ کپ کا خطاب

انگلینڈ کی ٹیم

ہدف کے تعاقب میں اتری انگلینڈ کی ٹیم کی جانب سے سب سے زیادہ رن بین اسٹوکس نے بنائے ۔ اسٹوکس نے 84 رنوں کی ناٹ آوٹ اننگز کھیلی ۔ اس کے علاہ بٹلر نے بھی 59 رن کی شاندار اننگز کھیلی ۔ علاوہ ازیں جیسن رائے نے 17 رن ، بیرسٹو نے 36 رن ، جو روٹ نے سات رن ، کپتان مورگن نے نو رن ، کرس ووکس نے دو رن ، پلنکیٹ نے 10 رن بنائے ۔

اس سے پہلے نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کیا۔ اوپنر مارٹن گپٹل اگرچہ 19 رنز بنا کر ٹیم کے 29 کے اسکور پر آؤٹ ہو گئے لیکن بعد کے بلے بازوں نے شاندار مظاہرہ کرتے ہوئے نیوزی لینڈ کو لڑنے کے قابل اسکور تک پہنچا دیا۔ہنری نکولس نے صبر و تحمل کے ساتھ بلے بازی کی اور اپنی نویں ون ڈے نصف سنچری بنائی۔ نکولس نے 77 گیندوں پر 55 رنز کی اننگز میں چار چوکے لگائے۔ اس سے پہلے گپٹل نے 18 گیندوں پر 19 رنز میں دو چوکے اور ایک چھکا لگایا تھا۔

کپتان کین ولیمسن نے 53 گیندوں پر دو چوکوں کی مدد سے 30 رن، راس ٹیلر نے 31 گیندوں میں 15 رنز، لاتھم نے 56 گیندوں میں دو چوکوں اور ایک چھکے کے سہارے 47 رن، جیمز نیشام نے 25 گیندوں میں تین چوکوں کی مدد سے 19 رنز اور کولن ڈی گرینڈ ہوم نے 28 گیندوں میں 16 رنز بنائے۔انگلینڈ کی طرف سے کرس ووکس نے نو اوور میں 37 رن پر تین وکٹ، لیام پلنکیٹ نے 10 اوور میں 42 رن پر تین وکٹ اور مارک ووڈ نے 10 اوور میں 49 رن پر ایک وکٹ لیا۔گپٹل کو تیز گیند باز کرس ووکس نے ایل بی ڈبلیو کیا۔ گپٹل کا وکٹ گرنے کے بعد نکولس اور ولیمسن نے دوسرے وکٹ کے لئے 74 رن کی ساجھےداری کی۔ لیام پلنکیٹ نے 15 رن کے وقفہ میں ولیمسن اور نکولس کے وکٹ لئے۔ راس ٹیلر بھی جلدی آؤٹ ہو گئے۔ ٹیلر کو مارک وڈ نے ایل بی ڈبلیو کیا۔ ٹیلر کا وکٹ گرنے کے بعد نیوزی لینڈ کا اسکور چار وکٹ پر 141 رن ہو گیا۔

لاتھم اور نیشام نے پانچویں وکٹ کے لئے 32 رن جوڑے۔ نیشام کو پلنکٹ نے جو روٹ کے ہاتھوں کیچ کرایا۔ نیشام کا وکٹ 173 کے اسکور پر گرا۔ لاتھم نے پھر گرینڈ ہوم کے ساتھ چھٹے وکٹ کے لئے 46 رن کی اہم شراکت کی۔ ووکس نے گرینڈ ہوم کو اپنا دوسرا شکار بنایا اور پھر لاتھم کا وکٹ بھی لیا۔لاتھم 49 ویں اوور میں آؤٹ ہوئے جبکہ جوفرا آرچر نے 50 ویں اوور میں میٹ ہنری کو بولڈ کیا۔ ہنری چار رن ہی بنا سکے۔ مشیل سیٹنر پانچ رن پر ناٹ آؤٹ رہے۔ آرچر نے 10 اوور میں 42 رن پر ایک وکٹ حاصل کیا۔

یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔ 

Loading...