آئی پی ایل فائنل- سامنے آئی شین واٹسن کے رن آوٹ ہونے کی وجہ، جان کرمداحوں کے آنکھوں میں آئےآنسو– News18 Urdu

آئی پی ایل فائنل- سامنے آئی شین واٹسن کے رن آوٹ ہونے کی وجہ، جان کرمداحوں کے آنکھوں میں آئےآنسو

چنئی سپرکنگس کے سلامی بلے بازشین واٹسن نے 59 گیندوں میں 80 رنوں کی اننگ کھیلی، لیکن آخری اوورمیں کنال پانڈیا نے رن آوٹ کردیا تھا۔

May 14, 2019 08:40 AM IST | Updated on: May 14, 2019 08:40 AM IST

انڈین پریمیرلیگ کے فائنل میں ممبئی انڈینس نے چنئی سپرکنگس کو ایک رن سے شکست دے دی۔ ایک وقت ایسا تھا جب چنئی آسانی سے میچ جیت رہی تھی، لیکن آخری اوورمیں شین واٹسن کے رن آوٹ ہوتے ہی پورے میچ کا رخ ہی بدل گیا اورممبئی آئی پی ایل چمپئن بن گئی۔ شین واٹسن نے فائنل میچ میں 59 گیندوں میں 80 رنوں کی اننگ کھیلی، لیکن 20 اوورکی چوتھی گیند پروہ کنال پانڈیا کے ہاتھوں رن آوٹ ہوگئے۔ دو رن لینے کے چکرمیں واٹسن نے تیزدوڑلگائی، لیکن وہ کریز تک نہیں پہنچ سکے۔

چنئی کے فائنل میچ ہارنے کے بعد اب چنئی کے سینئرکھلاڑی ہربھجن سنگھ نے واٹسن کو لے کربڑا انکشاف کیا ہے۔ ہربھجن سنگھ نے بیان دیا کہ شین واٹسن کے گھٹنے میں چوٹ لگی ہوئی تھی۔ واٹسن کے گھٹنےسے خون بھی بہہ رہا تھا، لیکن شین واٹسن نے یہ بات ٹیم کے کسی کھلاڑی کونہیں بتائی اوروہ بلے بازی کرتے رہے۔ ٹیم کواس کے بارے میں تب پتہ چلا جب وہ آوٹ ہوکرواپس آگئے۔ میچ کے بعد واٹسن کے پیروں میں 6 ٹانکے لگے۔

آئی پی ایل فائنل- سامنے آئی شین واٹسن کے رن آوٹ ہونے کی وجہ، جان کرمداحوں کے آنکھوں میں آئےآنسو

شین واٹسن۔ تصویر: آئی پی ایل

آئی پی ایل 2019 میں واٹسن کی کارکردگی

گزشتہ آئی پی ایل میں چنئی سپرکنگس کو چمپئن بنانے والے شین واٹسن نے اس سیزن میں فرنچائزی کو مایوس کیا۔ انہوں نے 17 میچوں میں محض 23.41 کی اوسط سے 398 رن بنائے۔ واٹسن نے محض تین نصف سنچریاں بنائیں۔ حالانکہ دباووالے میچ میں واٹسن کا بلہ رنگ میں نظرآیا۔ واٹسن نے دوسرے کوالیفائرمیں دہلی کے خلاف نصف سنچری لگائی اور اپنی ٹیم کو فائنل تک پہنچایا۔ اس کے بعد واٹسن نے ممبئی انڈینس کے خلاف فائنل میں بھی نصف سنچری لگاکراپنی ٹیم کو تقریباً جیت دلا دی تھی، لیکن پاوں میں لگی چوٹ کے سبب وہ ایسا نہیں کرپائے۔

چنئی سپرکنگس کے بلے باز شین واٹسن۔ تصویر: آئی پی ایل چنئی سپرکنگس کے بلے باز شین واٹسن۔ تصویر: آئی پی ایل

چنئی کی شکست کی وجہ رہی بلے بازی

صرف شین واٹسن ہی نہیں چنئی سپرکنگس کے دوسرے بڑے بلے باز بھی اس سیزن میں فلاپ ثابت ہوئے۔ مہندر سنگھ دھونی نے آئی پی ایل ہارنے کی سب سے بڑی وجہ خراب بلے بازی ہی بتائی۔ سریش رینا 17 میچوں میں 23.93 کی اوسط سے 383 رن ہی بناسکے۔ امباتی رائیڈو نے 17 میچوں میں 23.50 کی اوسط سے 282 رن ہی بناسکے۔ رائیڈو کا تو اسٹرائیک ریٹ بھی محض 93 کا رہا۔ کیدارجادھو 18.00 کے اوسط سے 162 رن ہی بناپائے۔ فائنل میں بھی یہی دیکھنے کو ملا اورچنئی کی ٹیم 150 رنوں کے ہدف سے ایک رن دوررہ گئی۔