عدالت میں بولی لڑکی۔ رات میں مجھے رکن اسمبلی جی کے پاس بھیجا جاتا تھا

بہار کے بھوج پور ضلع میں ایک نابالغ لڑکی نے عدالت میں بیان درج کروایا ہے کہ اسے رکن اسمبلی کے پاس بھیجا جاتا تھا۔

Jul 24, 2019 11:34 AM IST | Updated on: Jul 24, 2019 11:56 AM IST
عدالت میں بولی لڑکی۔ رات میں مجھے رکن اسمبلی جی کے پاس بھیجا جاتا تھا

علامتی تصویر

بہار کے بھوج پور ضلع میں ایک سنسنی خیز معاملہ سامنے آیا ہے۔ یہاں ایک نابالغ لڑکی نے عدالت میں بیان درج کروایا ہے کہ جس سے ریاست میں سیکس ریکٹ چلنے میں سیاستدانوں کی ملی بھگت ظاہر ہو رہی ہے۔ نابالغ لڑکی نے عدالت میں دئیے اپنے بیان میں کہا ہے کہ اسے رکن اسمبلی کے پاس بھیجا جاتا تھا۔ حالانکہ اس نے کسی رکن اسمبلی کا نام نہیں لیا ہے۔

غور طلب ہے کہ دو دن پہلے آرا کی رہنے والی لڑکی کے توسط سے بھوج پور میں پولیس نے پٹنہ میں چل رہے ایک بڑے سیکس ریکٹ کا انکشاف کیا تھا۔ حالانکہ سیکس ریکٹ کا ماسٹر مائنڈ ابھی بھی فرار بتایا جا رہا ہے۔

Loading...

نابالغ لڑکی نے اپنے درج کردہ بیان میں کہا ہے کہ لڑکیوں کو آرا کے ایک انجینئر کے گھر پر اور ہوٹلوں میں لایا جاتا تھا۔ پولیس رکن اسمبلی کی شناخت کرنے اور سیکس ریکٹ چلانے والے ماسٹر مائند کی گرفتاری میں جٹ گئی ہے۔

حالانکہ اس معاملہ پر آرا کے ایس پی سشیل کمار نے کہا ہے کہ نابالغ لڑکی نے کسی رکن اسمبلی کا نام تو نہیں لیا ہے۔ پھر بھی ایک رکن اسمبلی کے پاس بھیجے جانے کی بات کہی ہے۔ ہم پورے معاملہ کی تہہ تک جانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ہمانشو کی رپورٹ

Loading...