crime physical abuse of girl students of college in the name of passing paper faridabad snm  امتحان میں پاس کرانے کے نام پر طالبات کے ساتھ جسمانی تعلقات ، پرنسپل تک پہنچا ویڈیو – News18 Urdu

امتحان میں پاس کرانے کے نام پر طالبات کے ساتھ جسمانی تعلقات ، پرنسپل تک پہنچا ویڈیو

طالبہ نے ملزموں کی ویڈیو اور آڈیو کی ریکارڈنگ پرنسپل کو سونپی ہے اور ملزموں کے خلاف سخت کارروائی کامطالبہ کیا ہے۔ وہیں پرنسپل نریندر کمار کا کہنا ہے کہ شکایت ملنے کے بعد سے ہی جانچ شروع کر دی گئی ہے۔

May 16, 2019 09:34 PM IST | Updated on: May 16, 2019 09:46 PM IST

دہلی سے متصل فریدآباد سے ایک سرکاری کالج میں امتحان میں پاس کرانے کے  نام پر  طالبات کا جنسی استحصال کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ الزام اسٹاف کے تین لوگوں پر لگے ہیں۔ ایک  طالبہ نے خط لکھ کر کالج  پرنسپل کو اپنی آپ بیتی بتائی ہے۔ طالبہ نے کال ریکارڈنگ اور ویڈیو ریکارڈنگ بھی پرنسپل کو سونپی ہے۔ جس میں ملزم دیگر طالبات کے نام لیتے بھی سنائی دے رہا ہے۔ طالبہ کی شکایت کے بعد جانچ کے احکام دے دئے گئے ہیں۔

پرنسپل کو بھیجے خط میں طالبہ نے الزام لگایا ہے کہ کالج میں تین لوگوں کی تگڑی طالبات کو اپنے جال میں پھنساکر ان کا استحصال کرتے ہیں۔ طالبہ کا کہنا ہے کہ داخلےکے دوران ان لوگوں کو طالبات کو پھنسانے کا سلسلہ شروع ہوجاتا ہے۔ مدد کرنے کے نام پر یہ طالبات کے موبائل نمبر حاصل کرکے ان سے بات چیت بڑھاتے ہیں اور امتحان میں پاس کرانے کا لالچ دیتے ہیں۔ باقاعدہ یہ کہا جاتا ہے کہ تمہارے امتحان (پیپر) الگ کمرے میں بٹھاکر کروایا جائے گا۔ اس کے عوض میں جسمانی تعلقات بنانے کا دباؤ بنایا جاتا ہے۔ فون پر فحش میسیج بھیجے جاتے ہیں اور تعلقات بنانے کیلئے مجبور کیا جاتا ہے۔

امتحان میں پاس کرانے کے نام پر طالبات کے ساتھ جسمانی تعلقات ، پرنسپل تک پہنچا ویڈیو

علامتی تصویر ۔

Loading...

طالبہ نے خط میں اس بات کا بھی انکشاف کیا کہ اس تکڑی میں ایک ایسو سی ایٹ پروفیسر، ایک جونیئر لیب اسسٹینٹ اور ایک چپراسی بھی شامل ہے۔ اس تکڑی کا ماسٹر مائنڈ ایسوسی ایٹ پورفیسر کو بتایا گیا ہے۔ جبکہ ساری ڈیل جونیئر لیب اسسٹینٹ کرتا ہے۔

طالبہ نے ملزموں کی ویڈیو اور آڈیو کی ریکارڈنگ پرنسپل کو سونپی ہے اور ملزموں کے خلاف سخت کارروائی کامطالبہ کیا ہے۔ وہیں پرنسپل نریندر کمار کا کہنا ہے کہ شکایت ملنے کے بعد سے ہی جانچ شروع کر دی گئی ہے۔

Loading...