دادری سانحہ: مشتعل بھیڑ اخلاق کے پورے خاندان کو زندہ جلا دینا چاہتی تھی– News18 Urdu

دادری سانحہ: مشتعل بھیڑ اخلاق کے پورے خاندان کو زندہ جلا دینا چاہتی تھی

دادری۔ گریٹر نوئیڈا کے دادری سانحہ کو لے کر ایک سنسنی خیز انکشاف ہوا ہے۔

Oct 06, 2015 02:19 PM IST | Updated on: Oct 06, 2015 02:19 PM IST

دادری۔ گریٹر نوئیڈا کے دادری سانحہ کو لے کر ایک سنسنی خیز انکشاف ہوا ہے۔ محمد اخلاق کے داماد وسیم نے دعوی کیا ہے کہ مشتعل بھیڑ پورے خاندان کو جلا دینا چاہتی تھی۔

وسیم کا کہنا ہے کہ ہجوم نے میرے سسر اخلاق کے گھر کو آگ کے حوالے کرنے کا پورا منصوبہ بنا رکھا تھا۔ اس وقت بھیڑ کے ہاتھ میں مٹی کا تیل بھی تھا۔ مجھے پتہ چلا ہے کہ ان میں سے کچھ نے تو مٹی کے تیل وہاں انڈیل بھی دئیے تھے۔

دادری سانحہ: مشتعل بھیڑ اخلاق کے پورے خاندان کو زندہ جلا دینا چاہتی تھی

یوپی کے مودی نگر میں رہنے والے وسیم کی شادی محمد اخلاق کی بڑی بیٹی سے ہوئی ہے۔ وہ فی الحال نوئیڈا میں رہتے ہیں، جہاں ان کے ساتھ متاثر خاندان بھی ہے۔

دادری کے بساہڑا گاؤں سے وسیم 27 ستمبر کو بقرعید منانے کے بعد واپس لوٹ آئے تھے۔ بدقسمتی سے یہ واردات 28 ستمبر کی رات تقریباً 10.30 بجے کے ارد گرد ہوئی۔

وسیم نے بتایا کہ میں نے کبھی سوچا بھی نہیں تھا کہ جو خاندان اس گاؤں میں ایک طویل عرصہ سے امن اور محبت سے رہ رہا ہے، اس کے ساتھ ایسا بھی ہو سکتا ہے۔ اس سے مجھے بڑا دھکا لگا ہے۔

غور طلب ہے کہ گائے کا گوشت کھانے کی افواہ کی وجہ سے محمد اخلاق کو تقریباً 200 لوگوں کی بھیڑ نے پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا تھا۔ اس معاملے میں ابھی تک پولیس نے آٹھ افراد کو گرفتار کیا ہے جس میں مقامی بی جے پی لیڈر کا بیٹا بھی شامل ہے۔

بعد میں اتر پردیش کے وزیر اعلی اکھلیش یادو نے محمد اخلاق کے خاندان سے ملاقات کی اور انہیں حکومت کی جانب سے انصاف کا یقین دلایا تھا۔ وزیر اعلی نے کہا تھا کہ حکومت قصورواروں کو سزا دلانے کی ہر ممکن کوشش کرے گی۔

Loading...